واگنر گروپ کو عربی اور فرانسیسی زبانوں کے مترجمین کی تلاش، اشتہار جاری

عربی اور فرانسیسی زبانوں کے مترجمین کو معقول معاوضے کے علاوہ دیگر سہولیات کی بھی پیش کش کی گئی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

انٹرنیٹ پر انتہا پسندی پر نظر رکھنے والی امریکی ویب سائٹ "سائٹ" کے مطابق روس کے نجی مسلح گروپ "واگنر" نے عربی اور فرانسیسی میں مترجمین کی خدمات حاصل کرنے کے لیے ایک اشتہار شائع کیا ہے۔

یہ اشتہار ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب روس میں ناکام بغاوت کے بعد نجی کمپنی اور اس کے صدر یوگینی پریگوزن کی حیثیت کے حوالے سے غیر یقینی صورتحال پائی جاتی ہے۔

تاہم بیرون ملک اس کی سرگرمیاں خاص طور پر شام اور کئی افریقی ممالک خاص طور پر سوڈان، وسطی افریقی جمہوریہ اور مالی میں اب تک متاثر دکھائی نہیں دیتیں۔

گروپ نے اپنے "ٹیلیگرام" چینل کے ذریعے کہا کہ اسے عربی اور فرانسیسی دونوں زبانوں کے ماہر مترجمین کی ضرورت ہے۔

گروپ نے "مترجمین کے لیے معقول مالی معاوضہ"، انشورنس اور دیگر بنیادی سہولیات کے ساتھ ساتھ "دنیا کو دیکھنے کی پیش کش کی ہے۔

روس میں گروپ کے مستقبل اور حیثیت کے بارے میں سب سے زیادہ خدشات پائے جاتے ہیں۔ یوگینی پریگوزن نے 23-24 جون کو 24 گھنٹے سے بھی کم وقت کی روسی صدر ولادی میر پوتین کے خلاف بغاوت کی تھی جس کے بعد اس گروپ کے مستقبل کے بارے میں سوالات اٹھائے جا رہے تھے۔

بیلاروس کے صدر الیگزینڈر لوکاشینکو جنہوں نے پریگوزن اور روسی صدر ولادیمیر پوتین کے درمیان ثالثی کی تھی نے 27 جون کو تصدیق کی کہ ویگنر چیف جیسا کہ ثالثی معاہدے میں کہا گیا ہے بیلاروس میں ہیں۔ تاہم ان کا ایک تازہ بیان سامنے آیا ہے جس میں ان کا کہنا ہے پریگوزن سمیت واگر گروپ کا کوئی کمانڈر بیلا روس میں نہیں۔

لوکاشینکو نےجمعرات کو کہا تھا کہ واگنر کا سربراہ اس وقت روس میں ہے۔ تاہم کریملن کے ایک ترجمان سے جب اس حوالے سے سوال کیا گیا توانہوں نے جواب دیا کہ ماسکو پریگوزن کی نقل وحرکت پر نظر نہیں رکھتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں