حائل میں ٹریفک حادثے میں جاں بحق پولیس اہلکار کے بھائی کے درد بھرے تاثرات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے علاقے حائل میں ایک ٹریفک حادثے میں جاں بحق ہونے والے شہری سند کے بھائی حمدان الایداء نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ اس المناک حادثے کی تفصیلی بات چیت میں اس واقعے پر روشنی ڈالی ہے۔

خیال رہےکہ سعودی عرب میں حائل کے علاقے میں پیش آنے والے اس حادثے کی ویڈیو اور دیگر تفصیلات سوشل میڈیا پر بھی پوسٹ کی گئی ہیں۔ ان تفصیلات میں شہریوں نے ڈرائیونگ کے دوران بے احتیاطی سے گاڑیاں چلانے اور دوسروں کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالنے کی شدید مذمت کی ہے۔

سعودی عرب میں سماجی رابطوں کی ویب سائٹس اور سرچ انجنز میں ’سند جلال الایداء‘ کے نام کو سب سے زیادہ سرچ کیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتےہوئے حائل میں فوت ہونے والے سند کے بھائی حمدان الایدء نے کہا کہ ’ہم حادثے کی تفصیلات سوشل میڈیا پر شائع کرنے پر پریشان تھے اور ہم نہیں چاہتے تھے کہ لوگ پوچھیں کہ آپ کے بھائی کے ساتھ کیا ہوا۔یہ اس لیے کہ والدہ اور پورا خاندان صدمے میں تھا، لیکن جب ہم نے اسے صبان قبرستان میں دفن کردیا تو بڑی تعداد میں لوگ اس کی قبر پر فاتحہ خوانی اور اور تعزیت کے لیے آنے لگے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ان کے بھائی سند کی عمر 35 سال تھی اور وہ حائل پولیس میں کام کرتے تھے۔ میرے بھائی نے لوگوں کے لیے محبت اور اچھے کاموں کا ایک عظیم ورثہ چھوڑا ہے جسے ہم نے تعزیت کے لیے آنے والے ہر ایک شخص سے محسوس کیا۔

سند سب کے تھے

مقتول کے دوست منصور الشمری نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ یہ حادثہ رِنگ بیلٹ پر ایک ناٹ پل پر پیش آیا۔ اسی دن میری سند سے آخری ملاقات نماز فجر کے وقت ہوئی تھی۔

اس کی موت ایک غیر متوقع سانحہ تھا، وہ نیکی کا پیکر تھا اور سب کے ساتھ حسن سلوک کی وجہ سے پہچانا جاتا تھا۔ وہ بزرگوں کی مدد کرتا اور ان کی دعائین لیتا تھا۔

ملزم گرفتار

دوسری طرف حائل میں پولیس اور ٹریفک حکام نے ایک ایسے شخص کی گرفتاری کا اعلان کیا جسے ایک ویڈیو میں اپنی گاڑی تیز رفتاری سے چلاتے ہوئے دوسری گاڑی سے ٹکرا دیتا ہے۔ اس واقعے میں دوسری گاڑی کا ڈرائیور فوت ہوجاتا ہے۔ یہ دوسری گاڑی سند جلال الایداء کی تھی۔ اس حادثے میں وہ چل بسے تھے۔

جنونی ڈرائیونگ کرنے والے منچلے کو گرفتار کرکے اس کے خلاف قانونی کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔

دوسری طرف سوشل میڈیا پر شہریوں کی طرف سے حکام سے بار بار اپیل کی جا رہی تھی کہ وہ سند کی موت کا باعث بننے والے شخص کو گرفتار کر کے اس کے خلاف قانونی کارروائی کرے۔

پولیس نے اس واقعے کی ویڈیو فوٹیج حاصل کر کے ملزم کی شناخت کی اور اس کے بعد اسے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں