بائیڈن مختصر دورے پر برطانیہ پہنچ رہے، کنگ چارلس اور رشی سوناک سے ملاقات ہوگی

دورے کا مقصد دونوں ملکوں کے درمیان قریبی تعلقات کو مزید مضبوط بنانا ہے: وائٹ ہاؤس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن آج اتوار کو ایک مختصر دورے پر برطانیہ پہنچ رہے ہیں جس کے دوران وہ وزیر اعظم رشی سنک سے ملاقات کریں گے اور آئندہ نیٹو سربراہی اجلاس سے قبل کنگ چارلس کے ساتھ موسمیاتی تبدیلی کے مسائل پر تبادلہ خیال کریں گے۔

وائٹ ہاؤس نے کہا کہ اس دورے کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان قریبی تعلقات کو مزید مضبوط بنانا ہے۔

کنگ چارلس
کنگ چارلس

بائیڈن کل پیر کو ڈاؤننگ سٹریٹ میں برطانوی حکومت کے ہیڈ کوارٹر کا دورہ کریں گے اور سونک کے ساتھ ملاقات کریں گے۔ یہ کئی مہینوں میں ان کی پانچویں ملاقات ہوگی۔ ایک ماہ قبل دونوں نے "اٹلانٹک ڈیکلریشن" پر واشنگٹن میں اتفاق کیا تھا۔

سونک کے ترجمان نے کہا کہ ان کی بات چیت میں ممکنہ طور پر آئندہ نیٹو سربراہی اجلاس اور یوکرین کے مسائل شامل ہوں گے۔

سونک نے اپنے دفتر سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ ایک ایسے وقت میں جب ہمیں اپنی جسمانی اور اقتصادی سلامتی کے لیے نئے اور بے مثال چیلنجز کا سامنا ہے ہمارا متحد ہونا پہلے سے کہیں زیادہ اہم ہیں۔

رشی سونک
رشی سونک

سونک نے بائیڈن کے ساتھ تعلقات کو ٹھیک کرنے میں ایک طویل سفر طے کیا ہے۔ اپنے پیش رو بورس جانسن اور لز ٹیریس کے دور حکومت میں بریگزٹ کے بعد کے معاہدے پر سخت موقف اور سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ جانسن کے قریبی تعلقات کی وجہ سے یہ تعلقات سرد پڑ گئے تھے۔

بائیڈن اپنے دورے میں لندن کے مغرب میں واقع ونڈسر کیسل میں کنگ چارلس سے ملاقات بھی کریں گے۔ ونڈسٹر کیسل میں ہی آنجہانی کنگ کی والدہ ملکہ الزبتھ نے 2016 میں سابق امریکی صدر براک اوباما اور 2018 میں سابق صدر ٹرمپ کی میزبانی کی تھی۔ صدر اور بادشاہ آب و ہوا کے مسائل پر بات کرنے والے ہیں۔

ملاقات کے بعد بائیڈن اور سونک برطانیہ چھوڑ کر لتھوانیا جائیں گے جہاں وہ نیٹو سربراہی اجلاس میں باقی نیٹو رہنماؤں کے ساتھ شامل ہوں گے۔ ۔ اس کے بعد توقع ہے کہ بائیڈن نورڈک ممالک کے رہنماؤں سے ملاقات کے لیے ہیلسنکی جائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں