امریکی پولیس افسر کی سیاہ فام حاملہ خاتون سے بد سلوکی پر غم و غصہ

’’ مجھے ہاتھ مت لگانا، میں حاملہ ہوں، ’’ خاتون کی پکار، ’’مجھے فرق نہیں پڑتا‘‘ افسر کا جواب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ میں پولیس اہلکاروں نے اس مرتبہ سیاہ فام حاملہ خاتون کو بد سلوکی کا نشانہ بنا ڈالا۔ واقعہ کے بعد امریکہ بھر میں غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی ہے۔ امریکی پولیس کے اہلکاروں کے رویہ نے ملک بھر میں اشتعال پھیلا دیا ہے۔

امریکی میڈیا کی طرف سے شائع ایک ویڈیو کلپ میں دیکھا جا سکتا ہے کہ فلوریڈا میں پولیس اہلکاروں نے ایک کار کے گرد گھیرا ڈال لیا۔ کار کے اندر سیاہ فام حاملہ خاتون موجود ہے۔

یہ واقعہ گزشتہ مئی میں بوکارٹن میں کار کے مسافروں اور پولیس کے درمیان جھگڑے سے شروع ہوا۔ تاہم اس کی ویڈیو اتوار کو سامنے آئی ۔ کار میں خاتون کے ساتھ اس کے بچے بھی تھے۔

پولیس افسران اور کار کے مسافروں کے درمیان جھگڑے کے بعد ایک پولیس افسر نے حاملہ خاتون کو گاڑی سے باہر نکالا۔ خاتون نے چیخ کر کہا تھا "مجھے مت چھونا.. میں چھ ماہ کی حاملہ ہوں"۔ پولیس افسر نے خاتون کی بات نظر انداز کردی تھی۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ نامناسب الفاظ کے باعث ویڈیو کو شیئر کرنے سے گریز کر رہا ہے۔

پولیس عہدیدار نے خاتون کی باتوں پر توجہ نہ دی اور اسے زور سے کھینچا اور اس کے ہاتھوں میں ہتھکڑیاں لگانے سے پہلے ’’مجھے کوئی فرق نہیں پڑتا‘‘ کہہ کر اسے زمین پر گرا دیا۔

حکام کا کہنا تھا کہ واقعہ کے بعد ملوث پولیس عہدیدار کو قبل از وقت ریٹائرڈ کردیا گیا ہے۔ انسانی حقوق کی ایک تنظیم نے بھی پولیس اہلکار کی ریٹائرمنٹ کی تصدیق کردی۔ امریکی پولیس نے کہا کہ اس نے پولیس افسر کے رویے کی تحقیقات کی ہیں۔ حاملہ خاتون نے بعد میں بتایا کہ وہ پولیس اہلکار سے مزاحمت کرکے اپنے کسی دوسرے بچے کو نفسیاتی صدمہ پہنچانا نہیں چاہتی تھی۔ تاہم پولیس نے الزام عائد کیا ہے کہ خاتون نے پولیس افسر سے مزاحمت کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں