سعودی فنڈ کے 24کروڑ66 لاکھ ڈالرمالیت کی زرعی درآمدات کے لیے سمجھوتوں پر دست خط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے زرعی ترقیاتی فنڈ نے سویابین، جو اور مکئی کی درآمدات کے لیے متعدد کمپنیوں کے ساتھ 24 کروڑ 66 لاکھ ڈالر(926 ملین سعودی ریال) سے زیادہ مالیت کے متعدد سمجھوتوں پر دست خط کیے ہیں۔

سعودی فنڈ کے ایک بیان کے مطابق ان سمجھوتوں کا مقصد غذائی تحفظ کے اقدامات کی حمایت ہے اور اجناس اور زرعی رسد میں ہونے والی کسی بھی کمی کو پورا کرنا ہے۔

سعودی عرب اپنی خوراک کی زیادہ تر اشیاء بیرون ملک سے حاصل کرتا ہے، اس نے حالیہ برسوں میں غیر ملکی کمپنیوں کے ساتھ زرعی سمجھوتوں کا آغاز کیا ہے۔ اس ضمن میں سعودی ایگریکلچر اینڈ لائیو سٹاک انویسٹمنٹ کمپنی (ایس اے ایل آئی سی ،سالک) نے 2015 میں کینیڈ کے سابق گندم بورڈ میں اکثریتی حصص خریدکیے تھے۔

گذشتہ سال دسمبر میں ایس اے ایل آئی سی نے سنگاپور میں واقع زرعی تاجر اولم ایگری ہولڈنگز کے ایک ارب 24 کروڑ ڈالر مالیت کے حصص خریدکیے تھے۔ ایک ماہ قبل سعودی فرم نے بھارت کی چاول تیار کرنے والی کمپنی ایل ٹی فوڈز لمیٹڈ میں 9.2 فی صد حصص خریدنے پر رضامندی ظاہر کی تھی۔

سالک نے برازیل کی گوشت پیک کرنے والی کمپنی مِنروَا ایس اے کے ساتھ بھی شراکت داری کی ہے تاکہ آسٹریلیا میں زرعی زمین خریدنے کے بعد مذبح اور دُنبا پروسیسر یونٹ حاصل کیا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں