انڈونیشیا نے 2 لاکھ 73 ہزار ٹن خام تیل سے لدا ایرانی آئل ٹینکر قبضہ میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

انڈونیشیا کے کوسٹ گارڈ نے اعلان کیا ہے کہ اس نے غیر قانونی طور پر تیل کی نقل و حمل کے شبہ میں ایک ایرانی پرچم والے ٹینکر کو قبضہ میں لے لیا ہے۔

کوسٹ گارڈ نے کہا کہ ’’ ارمان 114 ‘‘ نام کا یہ بحری جہاز 2 لاکھ 72 ہزار 569 ٹن ہلکا خام تیل لے کر جارہا تھا۔ شبہ ہے کہ یہ بغیر اجازت کسی دوسرے بحری جہاز میں تیل منتقل کر رہا تھا۔

یہ اعلان اس وقت سامنے آیا ہے جب بین الاقوامی میری ٹائم آرگنائزیشن بحری جہازوں کو حفاظت اور شفافیت کے لیے مقام کا پتہ لگانے والے آلات استعمال کرنے کا پابند کر رہی ہے۔ ہیکنگ یا اسی طرح کے خطرات کی صورت میں جہاز کا عملہ ان آلات کو بند کر سکتا ہے۔ تاہم بحری جہاز اکثر غیر قانونی سرگرمیوں کی صورت میں اپنا مقام چھپانے کے لیے آلات کو بند کر دیتے ہیں۔

واضح رہے یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ انڈونیشیا نے کسی ایرانی آئل ٹینکر کو قبضہ میں لیا ہو۔ اس نے 25 جنوری 2021 کو اعلان کیا تھا کہ اس کے کوسٹ گارڈز نے ایرانی بحری جہاز ’’ایم ٹی ہارس‘‘ کو غیر قانونی طور پر تیل کی نقل و حمل کے شبے میں انڈونیشیا کے پانیوں سے حراست میں لیا تھا۔ انڈونیشیا نے بھی تقریباً 4 ماہ تک ایرانی جہاز کو روکے رکھا تھا یہاں تک کہ اسی سال مئی میں اسے چھوڑ دیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں