آسٹرین صحافی نے نیوز بلیٹن کے آخر میں اپنے سر پر پانی کیوں ڈالا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سنہ 2019 میں یورپ میں "جرنلسٹ آف دی ایئر" کا خطاب جیتنے والی آسٹریا کی مشہور ترین میڈیا شخصیت ارمین وولف نے کل منگل کو ٹی وی پر نیوز بلیٹن کے آخر میں اپنے سرپر پانی ڈال کر یہ احساس دلایا کہ یورپ میں گرمی کی شدت کتنی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔

ٹی وی چینل ’او آر ایف‘ سے منسلک صحافی نے اپنے سرپر جب پانی ڈالا تو اس وقت دارالحکومت ویانا کا درجہ حرارت 37.2 درجے سینٹی گریڈ تھا جو شائد تاریخ کا اس شہر میں سب سے زیادہ درجہ حرارت ہے۔

ان کے اس اقدام کا مقصد اپنے ناظرین کو گرمی کی شدت میں احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی طرف توجہ دلانا تھا۔ انہوں نے بلیٹن کے آکر میں پاس رکھی پانی کی بوتل اٹھائی اور اس میں موجود پانی سر پر انڈھیل دیا۔ اس سے ان کی جیکٹ اور شرٹ بھی بھیگ گئی۔

57 سالہ وولف نے خبرنامہ خود پڑھا، جس میں عالمی موسمیاتی ادارے کی طرف سے رپورٹ کیا گیا تھا کہ اس جولائی کا پہلا ہفتہ اب تک کا سب سے زیادہ گرم ہے اور اقوام متحدہ کی تنظیم کو توقع ہے کہ درجہ حرارت ریکارڈ سطح سے تجاوز کر جائے گا۔ حدت کی تازہ لہر سے خشکی اور سمندروں میں " ماحولیاتی نظام اور ماحول پر ممکنہ طور پر تباہ کن اثرات "مرتب ہوں گے۔ اس کے بعد انہوں نے پانی کی بوتل اٹھائی اور اسے اپنے سرپر ڈال دیا۔

ولف نے بعد میں اعتراف کیا کہ اس نے اپنے سر پر پانی ڈالنے کے خیال کے بارے میں ڈائریکٹر سے پہلے ہی بات کی تھی۔ ڈائریکٹر نے کہا تھا کہ پانی ڈالتے وقت اس بات کا خیال رکھنا کہ پانی کسی ڈیوائس پر نہ گرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں