چین: زہر دیکر ایک بچے کو قتل اور 24 کو بیمار کرنیوالی ٹیچر کو پھانسی دیدی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

چین میں چار سال قبل کھانے میں زہر ملا کر ایک بچے کو ہلاک اور 24 کو زخمی کرنے والی کنڈر گارٹن کی خاتون ٹیچر کو پھانسی دے دی گئی۔

چینی میڈیا نے جمعہ کو بتایا کہ 39 سالہ وانگ یون نے ستمبر 2020 میں صوبہ ہینان کی ایک عدالت کی طرف سے جاری کیے گئے فیصلے کے خلاف اپیل کی لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ میڈیا کے مطابق عدلیہ نے جمعرات کو وانگ کی شناخت کی تصدیق کی اور اسے پھانسی کے میدان میں لے جایا گیا جہاں سزا دی گئی ۔

مارچ 2019 میں وانگ نے اپنے ایک ساتھی کے ساتھ جھگڑے کے بعد سوڈیم نائٹریٹ کی ایک مقدار خریدی تھی۔ عدالتی فیصلے کے متن میں کہا گیا ہے کہ اگلی صبح وانگ نے بچوں کے کھانے میں سوڈیم نائٹریٹ ڈالا تھا۔

جنوری 2020 میں ایک بچہ زہر کے نتیجے میں مختلف اعضاء کے ناکارہ ہونے کے بعد انتقال کرگیا تھا۔ دیگر بچے بیمار ہوگئے تھے۔

وانگ کا کیس بچوں کی نرسری میں قتل اور تشدد کے کئی ہائی پروفائل کیسز میں سے ایک ہے۔ ایسے کیسز کا چین گزشتہ کچھ سالوں میں مشاہدہ کرتا آرہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں