’’ خم داراہرام کے پتھ دیکھ بھال کے کام کے دوران گرے‘‘:مصرمیں پھرابہام پھیلایاجانے لگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

گزشتہ دنوں مصر میں دہشور کی نادر تعمیرات والے علاقے میں کنگ سینیفرو کے خم دار اہرام کے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے کی خبریں گردش کرتی رہیں۔ مصری حکومت کی وضاحت کے باوجود اس حوالے سے بحث ختم نہیں ہورہی۔ سوشل میڈیا پر ’’خم دار ہرم‘‘ کے پتھر گرنے پر تبصرے بدستور جاری ہیں۔

فیس بک اکاؤنٹس نے اطلاع دی ہے کہ دہشور کے نوادرات کے علاقے میں واقع کنگ سینیفرو کے مڑے ہوئے اہرام کے پتھر لوہے کی صلیبوں سے مضبوط کرنے کے کام کے دوران گر گئے تھے۔

اس خبر نے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر اور مصریوں میں بڑے پیمانے پر غصے کو جنم دیا ہے۔ مصر اور دنیا میں اہرام کی عظیم تاریخی حیثیت ہے اور اسی اہمیت کے پیش نظر غم و غصہ بھی شدید ہے۔

کچھ لوگوں نے ایسے معاملات میں اس عمارت کی حفاظت کے لیے کوئی منصوبہ نہ ہونے پر بھی تنقید کی ہے۔ یہ معاملہ ایسا الجھ گیا جس نے مصری حکام کو فوری مداخلت کرنے پر مجبور کردیا۔

مصر کی وزارت سیاحت اور نوادرات نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر ایک پوسٹ میں اس بات کی تصدیق کی ہے کہ کچھ سماجی رابطوں کی سائٹس پر دہشور کے نوادرات کے علاقے میں کنگ سینیفرو کے خم دار ہرم کے گرنے والے پتھروں اور اس کو لوہے کی صلیبوں سے مضبوط کرنے کے بارے میں جو اطلاعات پھیلائی جارہی ہیں وہ بالکل غلط ہیں۔

نوادرات کی سپریم کونسل کے سیکرٹری جنرل مصطفیٰ وزیری نے کہا ہے کہ یہ معاملہ مکمل طور پر غلط ہے اور اہرام محفوظ ہے، عام طور پر لوگ اسے دیکھنے جاتے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ وزیری نے واضح کیا کہ اہرام میں لوہے کی مصلوبیاں نئی نہیں ہیں۔ کیونکہ سپریم کونسل آف نوادرات کے انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ نے انہیں مئی 2014 سے اہرام کے شمال مغربی کونے میں آثار قدیمہ کے علاقے کی نگرانی میں نصب کیا تھا۔ اہرام کے اس حصے کو محفوظ رکھنے میں اس کا بڑا کردار رہا ہے۔

بیان کے مطابق اہرام کی خم دار شکل اس طرح کی ہے جس طرح سے اسے کنگ سینفرو کے دور میں بنایا گیا تھا کیونکہ یہ پتھروں سے بنایا گیا تھا جس کا تخمینہ زمین کے مقابلے میں ترچھا زاویہ تھا۔

خیال رہے مصر میں سیاحت اور نوادرات کی وزارت نے بھی سوشل میڈیا صارفین سے اپیل کی ہے کہ وہ اس طرح کی خبریں شائع کرنے سے پہلے محتاط رہیں۔ ایسی خبروں سے شہریوں میں الجھن پیدا ہوسکتی

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں