شمالی کوریا میں بلااجازت داخل ہونے والا امریکی فوجی، حکام کے زیرِحراست ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

امریکا کا ایک شہری (فوجی؟) بلا اجازت شمالی کوریا میں داخل ہوا ہے اور امکان ہے کہ اسے شمالی کوریا کے حکام نے حراست میں لے لیا ہے۔شمالی اور جنوبی کوریا کے درمیان سرحد پر غیر فوجی علاقے کی نگرانی کرنے والی اقوام متحدہ کی کمان نے منگل کے روز اس واقعہ کی اطلاع دی ہے۔

یہ شخص 1950-53 کی کوریائی جنگ کے اختتام کے بعد سے دونوں ملکوں کو الگ کرنے والے غیر فوجی زون (ڈی ایم زیڈ) کی سرحد پر مشترکہ سکیورٹی ایریا کی سیر پر تھا۔اس علاقے میں دونوں اطراف کے فوجی پہرا دیتے ہیں۔

جنوبی کوریا کے روزنامہ ڈونگ اے ایلبو نے ملکی فوج کا حوالہ دیتے ہوئے اس شخص کی شناخت ٹریوس کنگ کے طور پر کی ہے۔ وہ امریکی فوج کا سپاہی ہے اور اس کا رینک نجی سیکنڈ کلاس کا ہے۔ اخبار نے بعد میں یہ نام حذف کر دیا ہے۔

اقوام متحدہ کی کمان (یو این سی) نے ٹویٹر پر کہا کہ 'جے ایس اے اورینٹیشن ٹور پر گئے ایک امریکی شہری نے بلا اجازت فوجی حد بندی لائن عبورکی اور وہ ڈیموکریٹک پیپلز ری پبلک آف کوریا (ڈی پی آر کے) کے علاقے میں داخل ہو گیا۔

بیان میں شمالی کوریا کی پیپلز آرمی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ’’ہمیں یقین ہے کہ وہ اس وقت شمالی کوریا کی تحویل میں ہے اور اس مسئلہ کو حل کرنے کے لیے کوششیں کی جارہی ہیں‘‘۔

ڈانگا اور چوسن البو اخبارات نے جنوبی کوریا کی فوج کے ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہے کہ یہ شخص عام شہریوں سمیت سیاحوں کے ایک گروپ کے ساتھ جنگ بندی گاؤں پان منجوم جا رہا تھا کہ اچانک اس نے سرحد کی نشان دہی کرنے والی اینٹوں کو عبور کرلیا۔

جنوبی کوریا میں امریکی فوج (یو ایس ایف کے) اور اقوام متحدہ کی کمان کے ترجمان کرنل آئزک ٹیلر نے اس بات کی تصدیق کرنے سے انکار کر دیا کہ آیا یہ شخص امریکی فوج کا اہلکار تھا یا یو ایس ایف کے کا رکن تھا۔انھوں نے خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ ’’ہم ابھی اس واقعہ کے بارے میں کچھ تحقیق کر رہے ہیں‘‘۔

امریکا کے محکمہ خارجہ ، وائٹ ہاؤس اور پینٹاگون نے فوری طور پر تبصرہ کی درخواستوں کا جواب نہیں دیا۔اس مبیّنہ فوجی نے ایسے وقت میں شمالی کوریا کی سرحد عبور کی ہے جب جب جزیرہ نما کوریا میں شدید کشیدگی پائی جاتی ہے اور امریکا کی جوہری ہتھیاروں سے لیس بیلسٹک میزائل آبدوز جنوبی کوریا میں پہنچ گئی ہے۔

شمالی کوریا جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت کے حامل طاقتور میزائلوں کا تجربہ کر رہا ہے۔ان میں گذشتہ ہفتے داغا گیا ایک نیا بین البراعظمی بیلسٹک میزائل (آئی سی بی ایم) بھی شامل ہے۔

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ اس کے پاس فوری طور پر سرحدی واقعے کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہیں۔امریکی محکمہ خارجہ کی سفری مشاورت میں امریکی شہریوں کے شمالی کوریا میں داخلے پر پابندی عاید ہے کیونکہ وہاں امریکی شہریوں کی گرفتاری اور طویل مدتی حراست کے سنگین خطرات موجود ہیں۔

یہ پابندی اس وقت عاید کی گئی تھی جب امریکی کالج کے طالب علم اوٹو وارمبیئر کو 2015 میں شمالی کوریا کے سفر کے دوران میں حکام نے حراست میں لیا تھا۔ وہ 2017ء میں شمالی کوریا سے رہا ہونے کے چند روز بعد انتقال کر گئے تھے۔انھیں کوما کی حالت میں امریکا واپس لے جایا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں