’’افغانستان کی سرزمین کو کسی ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے‘‘

طالبان کے وزیر خارجہ امیر خان متقی کی کابل میں پاکستانی نمائندے آصف درانی سے ملاقات میں یقین دہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

طالبان کے وزیر خارجہ امیر خان متقی نے افغان دارالحکومت میں پاکستانی نمائندے آصف درانی سے ملاقات میں اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ اپنی سرزمین کو کسی بھی ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے۔

افغان میڈیا کے مطابق طالبان حکومت کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بتایا کہ افغانستان میں پاکستانی حکومت کے نمائندے آصف درانی نے طالبان وزیر خارجہ امیر خان متقی سے ملاقات کی۔

دونوں رہنماؤں کی ملاقات میں دو طرفہ تعلقات سمیت باہمی امور کی دلچسپی کے امور بھی زیر بحث لائے گئے۔ پاکستانی نمائندۂ خصوصی نے طالبان حکومت کے وزیر خارجہ سے طورخم، جلال آباد سڑک کی بحالی اور تعمیر نو کے ساتھ ساتھ افغان شہریوں کو میڈیکل ویزے دینے کا وعدہ بھی کیا۔

افغانستان میں پاکستان کے نمائندۂ خصوصی کی وفد کے ہمراہ طالبان وزیر خارجہ سے ملاقات: ٹوئٹر @QaharBalkhi
افغانستان میں پاکستان کے نمائندۂ خصوصی کی وفد کے ہمراہ طالبان وزیر خارجہ سے ملاقات: ٹوئٹر @QaharBalkhi

ملاقات میں اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ خطے میں امن سب کے مفاد میں ہے، سکیورٹی معاملات پر دونوں ممالک ایک دوسرے سے مکمل تعاون کریں گے۔

یا رہے کہ یہ ملاقات پاک فوج کے ادارے آئی ایس پی آر کے اس بیان کے بعد ہوئی جس میں افغان سرزمین کی پاکستان میں دہشت گردی میں ملوث ہونے کی نشاندہی کرتے ہوئے طالبان حکومت سے سدباب کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان میتھیو ملر نے بھی پاکستان کے مطالبے کی تائید کرتے ہوئے طالبان حکومت سے امن معاہدے کی پاسداری پر زور دیا تھا جس میں طالبان نے اپنی سرزمین کو دہشت گردوں کے لیے آماج گاہ نہ بننے کی یقین دہانی کرائی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں