بغیر وجہ بتائے اچانک غائب، چینی وزیر خارجہ چن گینگ کہاں ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کئی ہفتوں سے منظر عام پر نہ آنے والے چینی وزیر خارجہ چن گینگ کی عدم موجودگی کے بعد عالمی میڈیا میں ان کی گمشدگی کی وجوہات کے بارے میں بہت سی قیاس آرائیاں اور افواہیں گردش کر رہی تھیں۔ اب اس حوالے سے وائٹ ہاؤس نے بھی اپنی خاموشی توڑ دی ہے۔

امریکی صدر کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے اعلان کیا ہے کہ وائٹ ہاؤس کو چینی وزیر خارجہ چن گینگ کے عوامی میدان سے غائب ہونے کی وجوہات کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہیں۔

چینی وزیر خارجہ کے حالات کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا ہمیں نہیں معلوم۔ ہمارے پاس اب تک ان کے بارے میں یہی معلوم ہے۔

سلیوان نے مزید کہا کہ چینی وزیر خارجہ چن گینگ انڈونیشیا میں جنوب مشرقی ایشیائی وزرا فورم (آسیان) کے فریم ورک کے اندر اپنے امریکی ہم منصب بلینکن سے ملاقات کرنے والے تھے۔ تاہم چینی وزارت خارجہ نے "آسیان" سربراہی اجلاس سے قبل اعلان کیا تھا کہ اس کے وزیر چن جنگ صحت کی وجوہات کی بنا پر انڈونیشیا میں منعقد ہونے والے "آسیان" کے اجلاسوں میں شرکت نہیں کریں گے۔

چینی وزارت نے اس بارے میں تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا کہ آیا چن گینگ کی صحت کے مسائل کورونا وائرس کے انفیکشن کی وجہ سے تھے۔

یاد رہے چن گینگ کے بجائے چیف چینی سفارت کار وانگ یی نے اجلاسوں میں شرکت کی تھی۔ وانگ یی ان سے قبل چینی وزیر خارجہ تھے۔

چینی وزارت خارجہ کی ویب سائٹ کے مطابق چن گینگ کی آخری ریکارڈ شدہ سرگرمی 25 جون کو تھی جب انہوں نے بیجنگ میں روس کے نائب وزیر خارجہ آندرے روڈینکو سے چین روس تعلقات پر بات چیت کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں