روس اور یوکرین

یوکرین میں زاپوریژیہ کے قریب گولہ باری سے ایک روسی صحافی ہلاک ، تین زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یوکرین کے جنوب مشرقی علاقے زاپوریژیہ میں فرنٹ لائن کے قریب گولہ باری کے نتیجے میں روس کی خبر رساں ایجنسی آر آئی اے (ریا) کا ایک جنگی نامہ نگار ہلاک اور تین دیگر روسی صحافی زخمی ہو گئے ہیں۔

روس کی وزارتِ دفاع کا کہنا ہے کہ یہ صحافی یوکرینی فوج کے توپ خانے کے حملے میں زخمی ہوئے تھے۔انھیں میدان جنگ سے نکال لیا گیا لیکن ریا کے نامہ نگار روستیسلاف ژوراف لیف اسپتال لے جاتے ہوئے سفر کے دوران میں ہلاک ہو گئے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ دیگرزخمیوں کی حالت سنگین لیکن مستحکم ہے اور ان کی زندگی کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ان کی تمام ضروری طبی دیکھ بھال کی جارہی ہے۔

ریانے اپنی ایک رپورٹ میں تصدیق کی ہے کہ اس کا نامہ نگار فرنٹ لائن گاؤں پیاتی خاتکی میں رپورٹنگ کے دوران میں مارا گیا ہے اور اس کا ایک کیمرا مین بھی زخمی ہوا ہے۔

روس کی وزارتِ دفاع کا کہنا ہے کہ یوکرینی فوج نے اس واقعے میں توپ خانے سے کلسٹر گولہ بارود کا استعمال کیا تھا لیکن اس کے حق میں کوئی ثبوت فراہم نہیں کیا۔

یوکرین کو رواں ماہ امریکا کی جانب سے کلسٹر بم ملے تھے لیکن اس نے وعدہ کیا ہے کہ وہ انھیں صرف دشمن کے فوجیوں کو ہٹانے کے لیے استعمال کرے گا۔اس طرح کے ہتھیاروں میں بہت سے چھوٹے بم ہوتے ہیں جو وسیع علاقے میں چھرے برساتے ہیں ، لیکن شہریوں کے لیے ممکنہ خطرے کی وجہ سے بہت سے ممالک میں ان کے استعمال پرپابندی عاید ہے۔ یوکرین نے بارہا کہا ہے کہ ان کا استعمال میدان جنگ تک محدود رہے گا۔

اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ روس نے خود جنگ کے دوران میں بار بار کلسٹر گولہ بارود کا استعمال کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں