ایران میں خواتین ملازماؤں کی بے حجاب تصاویر پر بڑی ای کامرس کمپنی کی بندش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران میں حکام نے ملک کی سب سے بڑی ای کامرس کمپنی کے ایک دفتر کو بند کر دیا ہے اور اس کے خلاف عدالتی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔اس کمپنی نے اپنی خواتین ملازماؤں کی لازمی حجاب کے بغیر تصاویر آن لائن شائع کی تھیں۔

’ایران کی ایمازون‘ کے نام سے مشہور ’ڈیجی کلا‘ نے ایک کارپوریٹ اجتماع کی تصاویر پوسٹ کی ہیں۔حکام نے بتایا ہے کہ اس نے ضابطۂ لباس سے متعلق قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔ان تصاویر میں متعدد ملازم خواتین نے سرپوش نہیں اوڑھا ہوا تھا۔

یہ کمپنی ماہانہ چار کروڑ سے زیادہ فعال صارفین کی حامل ہے اور 300،000 سے زیادہ تاجروں کی میزبانی کرتی ہے۔ ایران کے متنازع جوہری پروگرام کے نتیجے میں عاید کردہ مغربی پابندیوں کی وجہ سے ایرانی بڑی حد تک ایمازون جیسے بین الاقوامی آن لائن خوردہ فروشوں سے کٹے ہوئے ہیں۔

ایران کے دارالحکومت تہران کی بلدیہ سے وابستہ روزنامہ ہم شہری کی ویب سائٹ نے اتوار کی رات خبر دی تھی کہ ڈیجی کلا کے ایک دفتر کو سیل کر دیا گیا ہے۔ البتہ اس کی ویب سائٹ معمول کے مطابق کام کر رہی ہے۔

ایرانی عدلیہ کی ویب سائٹ کے مطابق ان تصاویر کے حوالے سے مقدمات دائر کیے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں