مدینہ میں عجوہ کھجور کی پیداوار، پائیدار زراعت کے فروغ کے لیے کمپنی قائم

کمپنی سعودی فوڈ اینڈ ایگریکلچر انڈسٹری کو بڑھانے میں کلیدی کردار ادا کرے گا اور مملکت کی معیشت میں تنوع پیدا کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ نے ایک نئی کمپنی قائم کی ہے جس کا مقصد مدینہ میں پائیدار زراعت کو فروغ دینا اور خطے میں عجوہ کھجور کے معیار اور پیداوار کو بہتر بنانا ہے۔

سرکاری سعودی پریس ایجنسی نے کہا ہے کہ المدینہ ہیریٹیج کمپنی (ایم ایچ سی) شعبہ خوراک اور زراعت کے فروغ اور ویژن 2030 کے مطابق مملکت کی معیشت کو متنوع بنانے میں کلیدی کردار ادا کرے گی۔

سعودی پریس ایجنسی نے پی آئی ایف میں مینا خطے کے لیے کنزیومر گڈز اینڈ ریٹیل کے سربراہ ماجد العصاف کے حوالے سے کہا کہ "کھجور کی صنعت سعودی عرب کے فوڈ اینڈ ایگریکلچر سیکٹر کا ایک کلیدی جزو ہے اور ویژن 2030 کی تکمیل میں اس کا اہم کردار ہے۔"

نئی کمپنی بنیادی طور پر جدید ترین زرعی ٹیکنالوجیز کو اپنا کر مدینہ میں پائیدار زراعت کی وسیع تر ترقی کے لیے کام کرے گی اور بڑھتی ہوئی عالمی طلب کو پورا کرنے کے لیے مقامی اور بین الاقوامی سطح پر عجوہ کھجور کی پیداوار اور تقسیم کو بڑھائے گی۔

عجوہ کھجور کو ان کی اعلیٰ غذائیت اور صحت کے اہم فوائد کی وجہ سے دنیا بھر میں بہترین کھجوروں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ مزید برآں، اسے اسلامی دنیا میں مذہبی اور ثقافتی اہمیت بھی ہے، خاص طور پر ہر سال مدینہ آنے والے ہزاروں زائرین اسے لازمی خریدتے ہیں۔

گزشتہ برسوں کے دوران، پی آئی ایف نے مقامی معیشت کو متنوع بنانے اور پیداواری صنعتوں کی مدد کے لیے خوراک اور زرعی شعبے میں اسٹریٹجک سرمایہ کاری کی ہے۔ ان میں سعودی الخولانی کافی بنانے والی کمپنی کا قیام، حلال مصنوعات کے فروغ کی کمپنی، جو حلال مصنوعات کے شعبے میں سرمایہ کاری کرتی ہے اور سعودی زرعی سرمایہ کاری اور لائیو اسٹاک پروڈکشن کمپنی، سالک شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں