وانگ یی چین کے دوبارہ وزیر خارجہ مقرر، منظرنامے سے غائب چِن گانگ سبکدوش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

چین نے منگل کے روز وزیر خارجہ چن گانگ کو ان کے عہدے سے ہٹانے کا اعلان کیا ہے اور ان کی جگہ ان کے پیشرو وانگ یی کودوبارہ وزیرخارجہ مقرر کیا ہے۔

ستاون سالہ چِن گانگ نے گذشتہ سال امریکا میں سفیر کی حیثیت سے مختصر مدت کے لیے خدمات انجام دی تھیں اور انھوں نے دسمبر میں وزیرخارجہ کا عہدہ سنبھالا تھا۔ وہ25 جون کے بعد سے عوامی سطح پر نظر نہیں آئے تھے۔ تب انھوں نے بیجنگ میں غیرملکی سفارت کاروں سے ملاقات کی تھی۔

انھوں نے حال ہی میں انڈونیشیا میں منعقدہ ایک بین الاقوامی سفارتی کانفرنس میں بھی شرکت نہیں کی تھی۔اس کے بعد ان کی وزارت نے کہا تھا کہ وہ صحت کی نامعلوم وجوہ کی بنا پر کام سے دور ہیں لیکن ان سے متعلق تفصیلی معلومات کی کمی نے قیاس آرائیوں کو ہوا دی۔

تجزیہ کاروں اور سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ اس سے چین کی قیادت میں شفافیت اور فیصلہ سازی کے بارے میں شکوک و شبہات میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

انہتر سالہ وانگ یی 2018 سے 2022 تک چین کے وزیرخارجہ رہ چکے ہیں۔اب وہ اپنا یہ عہدہ دوبارہ سنبھالیں گے۔چین کی وزارت خارجہ نے اس تبدیلی کی وجوہات کے بارے میں تبصرہ کرنے کی درخواست کا جواب نہیں دیا۔

چینی وزیرخارجہ کی تبدیلی ایسے وقت میں ہوئی ہے جب چین کے حریف سپر پاور امریکا کے ساتھ تعلقات کشیدہ ہیں اور اس کے ساتھ روابط کو بیجنگ نے سفارتی تعلقات کے قیام کے بعد سے اپنی کم ترین سطح قرار دیا ہے۔

دنیا کی دو سب سے بڑی معیشتوں کے درمیان تجارت اور ٹیکنالوجی سے لے کر تائیوان تک تنازعات اور اختلافات ہیں۔ چین جمہوری اور خود مختار جزیرے تائیوان کو اپناحصہ قراردیتا ہے جبکہ امریکا اس دعوے کو تسلیم نہیں کرتا۔اس کے علاوہ دونوں ممالک میں یوکرین میں روس کی جنگ پر بھی اختلافات ہیں۔بیجنگ کے ماسکو کے ساتھ قریبی تعلقات استوار ہیں اور اس نے اس جنگ کی مذمت نہیں کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں