’’عوام جدوجہد کے فوائد کی حفاظت کریں گے‘‘: فوجی بغاوت کے بعد معزول صدر کا بیان آ گیا

فوجی جوانوں کے ایک گروپ نے قومی ٹیلی ویژن پر صدر محمد بازوم کو اقتدار سے ہٹانے کا اعلان کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نیجر میں فوج نے صدر کو معزول کرنے اور ملک سرحدیں بند کرنے کا اعلان کر دیا۔ بدھ کی رات دیر گئے فوجی نے حکومت کا تختہ الٹ دیا۔ "قومی کونسل برائے تحفظ مادر وطن" کے نام سے پڑھے گئے ایک بیان میں فوجی اہلکاروں کے گروپ نے حکومت پر قبضہ کا اعلان کیا۔

بعد ازاں معزول صدر محمد بازوم نے کا بیان بھی آ گیا۔ معزول صدر محمد بازوم نے کہا شہری طویل جدوجہد کے بعد حاصل ہونے والی کامیابیوں کی حفاظت کریں گے۔

نیجر کے معزول صدر محمد بازوم  (اے ایف پی)
نیجر کے معزول صدر محمد بازوم (اے ایف پی)

قبل ازیںں صدر کو معزول کرنے والے کرنل میجر عمادو عبدالرحمٰن، جو 9 دیگر وردی پوش سپاہیوں میں گھرے ہوئے تھے، نے کہا تھا ہم نے یعنی دفاعی اور سکیورٹی فورسز نے قومی کونسل برائے تحفظ وطن کی میٹنگ میں اس نظام کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے جسے آپ جانتے ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ اقدام سلامتی کی صورتحال کے مسلسل بگاڑ اور معاشی اور سماجی بدانتظامی کی وجہ سے کیا گیا ہے۔

کرنل میجر عمادو عبدالرحمان اور دیگر فوجی
کرنل میجر عمادو عبدالرحمان اور دیگر فوجی

انہوں نے کونسل کی طرف سے نیجر کی طرف سے اٹھائی گئی تمام ذمہ داریوں کا احترام کرنے کی بھی توثیق کی۔ انہوں نے یقین دلایا کہ انسانی حقوق کے اصولوں کے مطابق معزول حکام کی جسمانی اور اخلاقی سالمیت کا احترام کیا جائے گا۔

فوجی بغاوت کے اعلان کے بیان میں تمام اداروں کے سربراہوں کی معطلی کی طرف بھی اشارہ کیا گیا اور کہا گیا کہ وزارتوں کے جنرل سیکرٹری کاروبار کو چلانے کے ذمہ دار ہوں گے۔ بیان میں کہا گیا کہ دفاع اور سکیورٹی فورسز صورتحال کو سنبھال رہی ہیں۔ ساتھ ی تمام بیرونی شراکت داروں سے مداخلت نہ کرنا کرنے کی درخواست کی گئی۔

علاوہ ازیں بیان میں کہا گیا کہ صورتحال کے مستحکم ہونے تک زمینی اور فضائی سرحدیں بند رہیں گی۔ اس دن سے 22:00 سے 05:00 تک (04ؔ00 تا 2100 جی ایم ٹی) کے اوقات میں کرفیو نافذ رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں