لڑائی کا حل فوجی رہنماؤں کی روانگی سے منسلک: حمیدتی، مہینوں بعد سامنے آگئے

فوج کی قیادت تبدیل ہونے پر 72 گھنٹوں میں معاہدے تک پہنچ سکتے ہیں: آر ایس ایف کمانڈر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان میں سریع الحرکت فورس کے کمانڈر محمد حمدان دقلو (حمیدتی) اپنے گروپ کے ارکان کے درمیان ایک ویڈیو میں نمودار ہوئے جو کئی مہینوں میں ان کی پہلی عوامی نمائش تھی۔

ریپڈ سپورٹ کمانڈر نے کہا کہ ہم جنگ کے نتائج کے لیے سوڈانی عوام سے معذرت خواہ ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ سوڈانی بحران کا فوری حل فوج کی قیادت کو تبدیل کرنے میں مضمر ہے۔ اگر ایسا ہوتا ہے تو 72 گھنٹوں کے اندر ایک معاہدہ طے پا سکتا ہے۔

حمیدتی نے زور دے کر کہا کہ فوجی قیادت سوڈان میں سابق حکومت کے رہنماؤں کی ہدایات پر کام کر رہی ہے۔ انہوں نے فوج کے کمانڈر عبدالفتاح البرہان کا حوالہ دیتے ہوئے مزید کہا ہم جھگڑے یا جنگ کے حامی نہیں ہیں، اور ہم اس شرط پر امن چاہتے ہیں کہ البرہان اور فوج کے کمانڈر اپنے آپ کو حوالے کر دیں۔

حمیدتی نے سوڈان میں ریپڈ سپورٹ فورسز کے کچھ ارکان کی طرف سے کی جانے والی خلاف ورزیوں کا بھی واضح طور پر اعتراف کیا اور کہا ہم آر ایس ایف کے ان ارکان کو مسترد کرتے ہیں جو قابو سے باہر ہیں۔

ریپڈ سپورٹ فورسز نے جمعرات کو کہا تھا کہ وہ بحران کے حتمی حل تک پہنچنے سے پہلے جنرل کمان میں سوڈانی فوج کے رہنماؤں پر مسلط کردہ محاصرہ ختم نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا تھا کہ اس کا وفد ابھی بھی جدہ میں موجود ہے۔

دوسری طرف سوڈانی فوج نے کہا ہے کہ جدہ مذاکرات کے لیے اس کا وفد بدھ کو مشاورت کے لیے وطن واپس آیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں