’بُری کال‘پرافراتفری؛پولیس کو امریکی کیپیٹل میں کوئی حملہ آورملا اور نہ کوئی زخمی ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

واشنگٹن پولیس کو بدھ کے روز کانگریس کی عمارت امریکی کیپیٹل کمپلیکس میں ایک فعال شوٹر کے گھسنے کی 'بُری کال' موصول ہوئی لیکن پولیس کو وہاں ممکنہ طور پر موجود کوئی سرگرم حملہ آور ملا ہے اور نہ ہی کوئی شخص زخمی ہوا ہے۔البتہ کچھ وقت کے لیے امریکی دارالحکومت میں افراتفری ضرورپھیل گئی۔

واشنگٹن میٹروپولیٹن پولیس ڈپارٹمنٹ کے ترجمان ہیو کیریو نے بتایا ہے کہ ’’انھیں کیپیٹل کمپلیکس میں ایک فعال شُوٹر کے موجود ہونے کی کال موصول ہوئی تھی لیکن ایسا لگتا ہے کہ یہ ایک ’بُری کال‘ تھی۔ وہاں چھان بین سے کسی فعال حملہ آورکے موجود ہونے کا سراغ نہیں ملا ہے‘‘۔

اس سے قبل امریکی کیپیٹل پولیس نے سینیٹ کے دفاتر کی عمارتوں میں موجود لوگوں پر زور دیا تھا کہ وہ محفوظ جگہوں میں پناہ لیں۔امریکی سینیٹ میں اس وقت موسم گرما کی تعطیلات ہیں اور زیادہ تر قانون ساز مختصر دورانیے کی اس افراتفری کے وقت واشنگٹن میں نہیں تھے۔ تاہم، کانگریس کے دفاتر میں عملہ موجود ہوتا ہے اور عام طور پر سینیٹ کے کیفے ٹیریا اور کافی شاپس، سکیورٹی پوسٹوں اور عمارتوں کی دیکھ بھال پر کام کرنے والے درجنوں ملازمین کے ساتھ ساتھ کیپیٹل کی عمارت میں سیاح بھی موجود ہوتے ہیں۔

سینیٹ کے ایک ملازم کا کہنا تھا کہ اگرچہ کیپیٹل کی عمارت خود لاک ڈاؤن کی بلند ترین سطح پر نہیں تھی، لیکن پولیس نے وہاں موجود تمام کارکنوں کو اپنے اپنے دفاتر میں رہنے کا مشورہ دیا۔

پولیس نے ملازمین اور دوسرے افراد سے کہا کہ اگر آپ سینیٹ کی عمارت کے اندر ہیں تو وہاں موجود ہر شخص کو جگہ جگہ پناہ لینی چاہیے کیونکہ رپورٹ ممکنہ طور پرایک سرگرم حملہ آور کی موجودگی کے بارے میں تھی۔ امریکی کیپیٹل پولیس نے سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ میں کہا کہ ہمارے پاس فائرنگ کی کوئی مصدقہ اطلاع نہیں ہے۔

پولیس نے بتایا کہ انھوں نے ایک ہنگامی فون کال کے جواب میں فوری کارروائی کی اورایڈوائزری میں لوگوں پر زور دیا کہ وہ اپنے دفاتر کے اندر گھس جائیں اور ساتھ ہنگامی سامان لے جائیں۔ اس نے انھیں اپنے برقی آلات کو خاموش کرنے اور خود خاموش رہنے کی بھی ہدایت کی۔

عمارتوں کے باہر پولیس کی بھاری نفری موجود تھی، کچھ ملازمین باہر کھڑے تھے اور سیاح کیپیٹل کمپلیکس کے احاطے کے ارد گرد جمع تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں