ایران: جنگل میں آگ لگنے سے جیل کے اطراف بارودی سرنگیں پھٹ گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی عدلیہ نے بتایا کہ سخت گرمی کی وجہ سے لگنے والی جنگل کی آگ شمالی تہران میں ایون جیل کے ارد گرد گھاس کے میدان میں تھوڑی دیر کے لیے بھڑک اٹھی۔ جمعہ کے روز اس آگ نے جیل کے اطراف سیکیورٹی زون میں بارودی سرنگوں کو دھماکے سے اڑا دیا۔

عدلیہ کی نیوز ایجنسی ’’ میزان ‘‘نے کہا کہ آگ صرف چند منٹوں تک جاری رہی اور اس پر فوری طور پر قابو پا لیا گیا۔ آگ سے جیل کی سہولیات کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

میزان کے مطابق آگ ایون جیل کے ارد گرد پہاڑیوں کے محفوظ علاقے میں پھیل گئی اور کئی بارودی سرنگوں کے پھٹنے کا سبب بن گئی۔ آگ سے کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔ بیان میں بارودی سرنگوں کے حوالے سے مزید تفصیل بھی نہیں بتائی گئی۔

ایون جیل بجلی کی خاردار تاروں سے بھی گھری ہوئی ہے۔ یہ جیل طویل عرصے سے ممتاز ایرانی سیاسی قیدیوں کے ساتھ ساتھ غیر ملکیوں اور دوہری شہریوں کو رکھنے کا مرکزی مقام رہا ہے۔

تہران کے ایوین محلے میں واقع اس سہولت میں ایسے مخالفین کو بھی رکھا گیا ہے جنہیں گزشتہ ستمبر میں 22 سالہ کرد نژاد ایرانی خاتون مہسا امینی کی پولیس کی حراست میں موت کے بعد پیدا ہونے والی بدامنی کی لہر میں گرفتار کیا گیا تھا۔

اکتوبر میں ایون جیل کے ایک حصے میں آگ لگنے سے کم از کم آٹھ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ جنوبی ایران کے کئی شہر پہلے ہی دنوں کی غیر معمولی گرمی کا شکار ہو چکے ہیں۔ سرکاری میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ جنوبی شہر اھواز میں درجہ حرارت 51 سیلسیس سے بھی بڑھ گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں