مصرمیں اسرائیلی لڑکی کو اس کی شناخت کے بعد ہوٹل سے نکالے جانے کی تحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک اسرائیلی اخبار نے انکشاف کیا ہے کہ ایک مشہور اسرائیلی ماڈل کو مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے ایک ہوٹل سے اس وقت نکال دیا گیا جب ہوٹل انتظامیہ نے اس کی قومیت کا پتہ چلایا۔

اسرائیلی اخبار "یروشلم پوسٹ" نے کہا ہے کہ اسرائیلی ماڈل شائی ژانکو کو قاہرہ کے ایک ہوٹل سے نکال دیا گیا۔ اس کے اسرائیلی شہریت کا پتا چلنے کے بعد اسے فوری طور پر ہوٹل چھوڑنے کو کہا گیا۔

اخبار نے بتایا کہ ماڈل بین الاقوامی ریپر ٹریوس اسکاٹ کے ساتھ تھی جو مصر میں ایک کنسرٹ میں پرفارم کرنے جا رہی تھی۔ انہوں نے اسرائیلی ماڈل کو مدعو کیا تھا تاہم بعد میں کنسرٹ کو منسوخ کر دیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس کی آمد کے ایک دن بعد وہ ہوٹل جس میں وہ ٹھہری ہوئی تھی پتہ چلا کہ وہ اسرائیلی ہے، تو وہاں موجود کارکنوں نے موقع کا فائدہ اٹھایا کہ وہ گلوکار اور اس کے عملے کے ساتھ نہیں تھی اور اسے فوری طور پر وہاں سے جانے کو کہا۔

اسرائیلی ماڈل ژانکو کا کہنا ہے کہ میں بہت گھبرائی، ناراض ہوئی اور ہوٹل سے سیدھا ہوائی اڈے پر چلی گئی۔ وہاں پتا چلا کہ وہاں کی واحد پرواز پیرس کے لیے تھی۔

اسرائیلی ماڈل
اسرائیلی ماڈل

چیمبر آف ہوٹل اسٹیبلشمنٹ کے ایک سرکاری ذریعے نے بتایا کہ چیمبر نے معاملے کی تحقیقات شروع کی ہیں۔ "قاہرہ 24" کو دیے گئے بیان میں اس بات کی تصدیق کی کہ ہوٹل سیاحت کے لیےمجاز ہے اور اس کے خلاف ضروری اقدامات کیے جائیں گے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ وزارت سیاحت یا حکام کی جانب سے کسی بھی شہری کو ہوٹلوں میں داخلے سے روکنے کے لیے کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔

بین الاقوامی گلوکار ٹریوس سکاٹ کے کنسرٹ کا اہتمام کرنے والی کمپنی نے گزشتہ بدھ کو کنسرٹ منسوخ کرنے کا اعلان کیا تھا، جو 30 جولائی کو اہرام کے دامن میں ہونا تھا اور اس نے بڑے تنازعے جنم دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں