امریکی ’مسیحا‘ پر مریضوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے مناظر فلم بند کرنے کا شرمناک الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

امریکی پراسیکیوٹرز کے مطابق نیو یارک سٹی کے ایک ڈاکٹر پر پیر کو کم از کم چھ خواتین مریضوں کے مبینہ جنسی استحصال کے الزام میں فرد جرم عائد کی گئی۔ ان میں متعدد ایسی مریض خواتین بھی شامل ہیں جنہیں ایک معزز مقامی ہسپتال میں علاج کے دوران نشہ دیا، فلمایا اور زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

ژی ایلن چینگ کو پیر کو تین زنانہ مریضوں سے نیویارک کے پریسبیٹیرین کوئنز ہسپتال میں اور تین دیگر خواتین سے کوئنز، نیو یارک میں اپنے اپارٹمنٹ کے اندر زیادتی کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ اس نے الزامات کا اعتراف نہیں کیا۔

33 سالہ گیسٹرو اینٹرولوجسٹ کو دسمبر میں اس کے کوئنز کے گھر میں ایک شناسا خاتون سے مبینہ زیادتی کے الزام میں گرفتار کیا گیا جس کے بعد اسے اسپتال کی ملازمت سے برطرف کر دیا گیا تھا۔ اس وقت خاتون نے حکام کو بتایا کہ اس نے ایسی ویڈیوز دریافت کیں جو اس کے اور کئی دیگر خواتین کے ساتھ زیادتی پر مبنی تھیں۔

نئی فرد جرم کے مطابق جب تفتیش کاروں نے اس کے گھر اور آلات کی تلاشی لی تو انہوں نے ویڈیو شواہد کا ایک ذخیرہ دریافت کیا جس میں دکھایا گیا کہ ڈاکٹر اپنے گھر اور کام کی جگہ پر خواتین کے ساتھ زیادتی کرتا تھا۔

استغاثہ نے بتایا کہ فوٹیج میں چینگ کو ہسپتال کی تین مریضوں کو گرفت میں لیتے ہوئے دکھایا گیا ہے جن میں ایک 19 سالہ لڑکی اور ایک 47 سالہ "شدید بیمار" شامل ہے۔ عدالتی دستاویزات کے مطابق تمام خواتین زیادتی کے دوران بے ہوش نظر آتی ہیں جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ چینگ نے انہیں بے ہوش کرنے کے لیے دوا کا استعمال کیا۔

عدالتی دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ اس کے گھر سے کوکین اور ایکسٹیسی جیسی تفریحی منشیات کے ساتھ متعدد قسم کے مائع اینستھیزیا (بے ہوشی کی دوا) برآمد کی گئیں۔

چینگ کے وکیل نے فوری طور پر تبصرہ کی درخواست کا جواب نہیں دیا۔

ایک بیان میں کوئینز ڈسٹرکٹ اٹارنی میلنڈا کاٹز نے کہا کہ شواہد "ایک سیریل ریپسٹ کو سامنے لاتے ہیں جو نہ صرف اپنے مقدس پیشہ ورانہ حلف اور مریضوں کے اعتماد بلکہ انسانی شرافت کے ہر معیار کی خلاف ورزی کرنے پر آمادہ ہے۔"

یہ گرفتاری نیو یارک-پریسبیٹیرین ہسپتال کے ایک اور ڈاکٹر، ماہرِ امراضِ چشم رابرٹ ہیڈن کو سزا سنائے جانے کے بعد ہوئی ہے۔ ڈاکٹر رابرٹ ہیڈن نے دو عشروں کے دوران مبینہ طور پر 245 خواتین کے ساتھ زیادتی کی۔ اسے جون میں 20 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

چینگ کی مبینہ زیادتی کے واقعات 2021 اور 2022 کے درمیان بہت کم عرصے میں رونما ہوئے۔ لیکن استغاثہ نے کہا کہ ان کے پاس موجود اضافی شواہد بتاتے ہیں کہ چینگ نے نیویارک سٹی، لاس ویگاس، سان فرانسسکو اور تھائی لینڈ کے مختلف مقامات پر دوسری خواتین سے زیادتی کا ارتکاب کیا اگرچہ ان واقعات کے سلسلے میں اس پر فرد جرم عائد نہیں کی گئی۔

نیویارک پریسبیٹیرین کی ترجمان انجیلا کارافازی نے کہا کہ چینگ کا مبینہ طرز عمل "ہمارے مشن اور ہمارے مریضوں کے اعتماد کے ساتھ بنیادی خیانت ہے۔"

انہوں نے کہا۔ "ہسپتال مریضوں کی حفاظت کی پالیسیوں پر نظرثانی کرنے اور تمام ملازمین کے لیے اضافی تربیت کے انعقاد کا ارادہ رکھتا ہے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں