امریکا پاکستان میں رونما ہونے والے واقعات کو تشویش کی نگاہ سے دیکھ رہا ہے:وائٹ ہاؤس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے ترجمان جان کربی نے بدھ کے روز ایک بریفنگ میں کہا کہ امریکا پاکستان میں رونما ہونے والے واقعات کو تشویش کے ساتھ دیکھ رہا ہے۔

جان کربی نے یہ تبصرہ پاکستان کی صورت حال کے بارے میں ایک سوال پوچھے جانے پر کیا ہے۔ پاکستان کی ایک عدالت نے اسی ہفتے سابق وزیر اعظم عمران خان کو حال ہی میں توشہ خانہ کیس میں قید کی سزا سنائی ہے جبکہ ملک میں دہشت گردوں کے حملوں میں اضافہ ہوا ہے۔

جان کربی نے ہمیں واضح طور پر کسی بھی ایسے اقدامات، خاص طور پر پرتشدد کارروائیوں پر تشویش ہے جو پاکستان یا کسی دوسرے ملک میں عدم استحکام کا باعث بن سکتے ہیں۔اس کے ساتھ انسداد دہشت گردی کے معاملے میں ہمارے مشترکہ مفادات ہیں، لہٰذا ہم اسے تشویش کی نگاہ سے دیکھ رہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان ایک شراکت دار ہے، خاص طور پر جب دنیا کے اس حصے میں انسداد دہشت گردی کے خطرے کی بات آتی ہے اور ہمیں پوری توقع ہے کہ وہ ایسے ہی رہیں گے۔

محکمہ خارجہ نے پیر کے روز کہا تھا کہ امریکا کے ناقد عمران خان کی گرفتاری ایک داخلی معاملہ ہے۔انھوں نے ان کی قانونی پریشانیوں پر کوئی موقف اختیار کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

دریں اثناء پاکستان کے وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ وہ صدر کو بدھ کو دیر گئے قومی اسمبلی کو تحلیل کرنے کا مشورہ دیں گے، جس سے ملک میں پارلیمانی انتخابات کی راہ ہموار ہوگی جبکہ ملک سیاسی اور معاشی بحران سے دوچار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں