پینٹاگون کا سعودی عرب کے ساتھ مضبوط فوجی تعلقات کے امریکی عزم کا اعادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے سعودی عرب کے ساتھ مضبوط فوجی تعلقات کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

پینٹاگون کے اعلیٰ پالیسی چیف نے یہ بات سعودی عرب کے نائب وزیر دفاع شہزادہ عبدالرحمٰن بن عیاف المقرن سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔

امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل مارٹن مینرز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انڈر سیکریٹری بیکر نے اپنے ہم منصب کو ان کے حالیہ تقرر پر مبارک باد دی اور امریکا کی جانب سے سعودی عرب کے ساتھ مضبوط دفاعی شراکت داری کے عزم کا اعادہ کیا۔

لیفٹیننٹ کرنل مینرز کے مطابق دونوں عہدے داروں نے امریکا اور سعودی عرب کے درمیان 80 سال پر محیط تزویراتی شراکت داری کی پائیداری اور اہمیت پر بھی زور دیا۔

اس سال کے اوائل میں امریکا اور سعودی عرب نے الریاض کی ایک نئے فوجی تجربہ گاہ میں اپنی پہلی مشترکہ انسداد ڈرون مشق مکمل کی تھی۔مئی کے آخر میں دونوں افواج نے سعودی عرب میں ایک مشترکہ مشق کی۔

عزم شاہین (ایگل ریزولیوشن) 23 کے نام سے امریکا، سعودی عرب اور خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) کے شراکت دار ممالک کی تیاریوں کو مضبوط بنانے کے لیے تیارکیا گیا تھا۔ان مشقوں کو مسلح افواج کے درمیان تعاون کو بہتر بنانے کے لیے ڈیزائن کیا گیا تھا، جس سے علاقائی استحکام میں مدد ملے گی۔

پینٹاگون کاکہنا ہے کہ پہلی باراس کثیرالجہت مشق میں بنیادی طور پر مربوط فضائی اور میزائل دفاع اور سمندری مداخلت پر توجہ مرکوز کی گئی۔منگل کے روز سعودی بحریہ بحیرہ احمر میں بھیجے گئے نئے امریکی جنگی جہازوں کے ساتھ تھی۔

حالیہ مہینوں کے دوران میں ایران اور روس کی دھمکیوں کے جواب میں 3000 سے زیادہ امریکی فوجی اور گائیڈڈ میزائل تباہ کن جہاز اتوار کے روز مشرق اوسط پہنچ گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں