تونس: ایک سرکاری ادارے پر بچھوؤں کے شکار میں بچوں کے استحصال کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بحیرہ روم کے بچوں کے تحفظ کی بین الاقوامی تنظیم نے تونس میں بڑے پیمانے پر تنازع کو جنم دیا ہے۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ وزارت صحت کے سرکاری پاسچر انسٹی ٹیوٹ پر زہریلے بچھو کے شکار میں بچوں کا استحصال کرنے کا الزام لگا کر ان سے فائدہ اٹھایا۔

تنظیم نے بدھ کے روز ایک بیان میں کہا کہ وہ تونس کے دیہی علاقوں میں ایک ایسے رجحان کے پھیلاؤ پر انتہائی تشویش کے ساتھ نظر رکھے ہوئے ہے۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ ایک سرکاری ادارہ دن دیہاڑے اور رات کی تاریکی میں بچوں کو زہریلی بچھوؤں کے شکار کی ترغیب دے کران کی زندگیوں کو خطرے میں ڈال رہا ہے۔

اس نے یہ بھی بتایا کہ شکار کی کارروائیاں "ایجنٹوں" کے فائدے کے لیے کی جاتی ہیں جو پاسچر گورنمنٹ انسٹی ٹیوٹ کے فائدے کے لیے ان کی دوگنی قیمت پر مارکیٹنگ کرتے ہیں۔ اس طرح ان نابالغوں کے خلاف کیے جانے والے اس جرم میں وہ ساتھی بن جاتے ہیں۔

فوری مداخلت

تنظیم نے اس رجحان کی مذمت کرتے ہوئے مقامی، علاقائی اور قومی حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ "تونس کے بچوں کے خلاف ہونے والی اس مہلک سرگرمی اور جرائم کو روکنے کے لیے فوری مداخلت کریں"۔ اس نے وزارت صحت سے مطالبہ کیا کہ "پاسچر انسٹی ٹیوٹ کو فوری طور پر ہدایات دیں۔ایجنٹوں سے ان بچھووں کو لینے پر پابندی لگائیں اور بچوں سے دور ان بچھوؤں سے ویکسین اور ادویات میں فائدہ اٹھانے کے لیے ایک محفوظ قومی پروگرام شروع کریں۔

ان الزامات پر اپنے ردعمل میں پاسچر انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر جنرل الہاشمی الوزیر نے سرکاری خبر رساں ایجنسی کو ایک بیان میں ان الزامات کی تردید کی ہے کہ "انسٹی ٹیوٹ ہی وہ ہے جس نے بچھوؤں کے شکار کے لیے بچوں کو تفویض کیا تھا"۔ "انسٹی ٹیوٹ نے ایک سال سے زیادہ عرصے سے بچھو یا سانپ حاصل نہیں کیے ہیں اور یہ کہ اس کا ذخیرہ بچھو اور سانپ کے کاٹنے کے لیے زہر مخالف ویکسین تیار کرنے کے لیے کافی ہے۔"

انہوں نے مزید کہا کہ "3 سال قبل انسٹی ٹیوٹ نے ایک منظم کمپنی کے ذریعے بچھوؤں اور سانپوں کے حصول کو شرائط کے ساتھ لیا تھا۔ اس کے بعد یہ واضح ہوا کہ خدمات اچھی نہیں تھیں۔ اس لیے معاہدہ دو سال بعد ختم کر دیا گیا۔ اس پر دستخط کیے گئے اور اس کے بعد کوئی خریداری نہیں کی گئی۔"

بچھو اور سانپ

پاسچر انسٹی ٹیوٹ کا کہنا ہے کہ "شرائط کا کتابچہ خرید و فروخت کے کاموں کو منظم کرتا ہے اور یہ کہ انسٹی ٹیوٹ کا چائلڈ لیبر سے کوئی تعلق نہیں ہے اور نہ ہی اسے اس کا کوئی علم ہے۔ بچھو یا سانپ کی خریداری زہروں کے استعمال کو ویکسین بنانے کے قابل بناتی ہے اور انہیں تیونس میں وزارت صحت کے ذریعے لوگوں کو کاٹنے سے بچانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔"

زہریلے بچھوؤں کا شکار تونس کے ریگستان اور جنوب کے ان علاقوں میں ایک عام بات ہے جہاں یہ ریکارڈ بلند درجہ حرارت کی وجہ سے پھیلتے ہیں۔ یہ کچھ لوگوں کا روزی روٹی کمانے کا بھی ذریعہ بن چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں