بائیڈن کے بیٹے کی تفتیش کے لیے آزاد پراسیکیوٹر مقرر کردیا گیا

ہنٹر بائیڈن پر عدلیہ نے ٹیکس چوری، اپوزیشن نے بیرون ملک مشکوک سودے کرنے کا الزام لگایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیر انصاف نے صدر بائیڈن کے بیٹے ہنٹر کی تحقیقات کے لیے ایک آزاد پراسیکیوٹر کی تقرری کا اعلان کردیا۔ عدالیہ نے ہنٹرر پر ٹیکس چوری کا الزام لگایا ہے۔ ریپبلکن اپوزیشن ہنٹر پر بیرون ملک مشکوک سودے کرنے کا الزام لگاتی ہے۔ یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب جو بائیڈن دوسری صدارتی مدت کے لیے انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔

امریکی وزیر انصاف میرک گارلینڈ نے ایک مختصر بیان میں کہا کہ وفاقی پراسیکیوٹر ڈیوڈ ویس نے پہلے رابرٹ ہنٹر بائیڈن کی جانب سے مجرمانہ طرز عمل کے الزامات کی تحقیقات کی تھیں۔ وزیر نے تصدیق کی کہ ویس نے منگل کو انہیں بتایا کہ وہ تحقیقات کے اس مرحلے پر پہنچ گئے ہیں جس کے لیے خصوصی پراسیکیوٹر کی تقرری کی ضرورت تھی۔

گارلینڈ نے مزید کہا کہ ویس نے تقرری کی درخواست کی۔ ان کی درخواست کے ساتھ ساتھ اس معاملے کے غیر معمولی حالات کا جائزہ لینے کے بعد میں اس نتیجے پر پہنچا ہوں کہ بطور خصوصی پراسیکیوٹر ان کی تقرری مفاد عامہ میں ہے۔

وزیر نے اس حوالے سے مزید وضاحت فراہم نہیں کی۔ 53 سالہ ہنٹر بائیڈن پر ٹیکس چوری اور اسلحہ رکھنے کا الزام ہے۔ وہ منشیات کا عادی تھا۔

سابق صدر ٹرمپ اور ریپبلکن برسوں سے امریکی صدر جو بائیڈن کے بیٹے ہنٹر کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ ہنٹر پر بدعنوانی کا الزام لگایا جارہا ہے۔ وزیر انصاف ہر قیمت پر کوشش کر رہے ہیں کہ موجودہ صدر کے بیٹے کے خلاف قید کی سزا جاری نہ کی جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں