سعودی عرب کی شہریوں کو ہوائی میں آگ سے متاثرہ علاقوں سے انخلاکی ہدایت

جزیرے ہوائی میں آتش زدگی سے مرنے والوں کی تعداد 80 ہوگئی،اماراتی شہریوں کو بھی محتاط رہنے کا مشورہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب نے ہوائی میں موجود اپنے شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ شدید آگ سے متاثرہ اس جزیرے نکل جائیں اور کسی بھی ہنگامی صورت حال میں سفارت خانے سے رابطہ کریں۔

امریکا میں سعودی سفارت خانہ نے جزیرے ہوائی کے کئی قصبوں میں تباہ کن آگ لگنے کے بعد اپنے شہریوں پرزوردیا تھا کہ وہ وہاں سے نکل جائیں۔ ہوائی میں اس خوف ناک آگ سے کم سے کم 80 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

سعودی پریس ایجنسی کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق ہوائی میں موجود سعودی شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ مقامی حکام کی جانب سے جاری کردہ حفاظتی ضوابط پر عمل کریں۔

اس نے مملکت کے شہریوں کوکسی بھی مدد کی ضرورت کی صورت میں چار رابطہ نمبر فراہم کیے ہیں۔ وہ یہ ہیں:
202-746-3555, 202-746-0666, 202-746-9777, اور 202-746-2888.

ہمسایہ ملک متحدہ عرب امارات نے بھی اپنے شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ موئی میں احتیاط برتیں۔اس پورے جزیرے میں آگ بڑی تیزی سے پھیل گئی ہے۔

لاس اینجلس میں متحدہ عرب امارات کے قونصل جنرل نے ہوائی کے جزیرے موئی پر موجود تمام اماراتیوں پر زور دیا ہے کہ وہ جنگل میں لگی آگ کے پیش نظر محتاط رہیں۔

اس نے کسی بھی ہنگامی صورت حال میں مدد کے لیے ایمرجنسی نمبر+1 (310) 551-6534 دیا ہے اور شہریوں کو آگ سے متاثرہ علاقوں سے دور رہنے کی تاکید کی ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ مقامی حکام کی جانب سے جاری کردہ ہدایات پر لازمی عمل کریں۔

خلیجی ریاست کی وزارت خارجہ نے جمعہ کے روز ایک بیان میں جنگل میں لگنے والی آگ سے ہلاک ہونے والوں کے خاندانوں سے تعزیت کا اظہار کیا تھا۔

جزیرے میں آگ لگنے کی اطلاع ملنے کے چار دن بعد تلاش اور بچاؤ کا کام جاری ہے۔آتش زدگی سے گھروں سمیت ہزاروں عمارتیں تباہ ہو گئی ہیں۔

Maudi

آتش زدگی کے واقعات میں زخمی ہونے والے بہت سے افراد کا علاج کیا جا رہا ہے۔ان میں بہت سے افراد جل گئے ہیں،انھیں دھویں سے سانس لینے میں دشواری کا سامنا ہے۔بعض دیگر امراض کا شکار افراد کا بھی علاج کیا جارہا ہے۔آگ اور سمندر کے درمیان پھنسے بعض لوگوں کو خود کو بچانے کے لیے پانی میں چھلانگ لگانے پر مجبور ہونا پڑا۔

یہ واضح نہیں ہے کہ آگ کس وجہ سے لگی، لیکن اطلاعات کے مطابق، انسان جنگل میں آگ کی بڑی وجہ ہیں۔ گرمی اور خشک موسم بھی آگ کا سبب ہوسکتا ہے۔

موئی کے شمال مغرب میں واقع قریباً 13,000 افراد کی آبادی والا ساحلی قصبہ لاہینا اس آگ سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔اس قصبے میں ہر سال 20 لاکھ سے زیادہ سیاح آتے ہیں۔موئی کے جنوب میں واقع ساحلی شہر کیہی کے ارد گرد بھی آگ بھڑک اٹھی ہے اور جزیرے کے پہاڑی مرکز میں واقع رہائشی علاقے کولا کے کچھ حصوں کے ساتھ ساتھ بگ آئی لینڈ کے جھلستے ہوئے حصے بھی تباہ ہوگئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں