شمالی چین میں مٹی کے تودے گرنے سے دو افراد ہلاک، 16 لاپتہ: سرکاری میڈیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سرکاری میڈیا نے ہفتے کے روز بتایا کہ شمالی چین کے شہر ژیان کے قریب شدید بارشوں کے نتیجے میں مٹی کے تودے گرنے سے دو افراد ہلاک اور 16 لاپتہ ہو گئے ہیں۔

چین کو حالیہ ہفتوں میں مہلک سیلاب اور تاریخی بارشوں کا سامنا کرنا پڑا ہے جبکہ ملک کے شمالی حصے میں آنے والے طوفانوں سے ہلاک شدگان کی تعداد کم از کم 78 تک پہنچ گئی ہے۔

ریاستی نشریاتی ادارے سی سی ٹی وی نے رپورٹ کیا، "11 اگست کو 18:00 بجے مختصر مدت کی مقامی شدید بارشوں کے نتیجے میں... اچانک پہاڑی سیلاب آ گیا اور مٹی کے تودے گرے۔

رپورٹ میں کہا گیا، ’’ابتدائی معائنہ سے معلوم ہوا ہے کہ اس وقت گاؤں کے دو گھر سیلاب میں بہہ گئے ہیں اور بنیادی ڈھانچے بشمول سڑکیں، پل اور بجلی کی فراہمی کو نقصان پہنچا ہے۔"

چین کے سرکاری میڈیا نے کہا کہ ہفتے کی صبح سے ہنگامی کارروائیاں اور بچاؤ کی کوششیں جاری ہیں کیونکہ 16 افراد لاپتہ ہیں۔

ژیان شہر کے مرکز سے دو گھنٹے جنوب میں ایک تنگ گھاٹی میں واقع ویزپنگ گاؤں میں اچانک سیلاب آ گیا۔

شہر میں ہنگامی انتظامات کے حکام نے ہفتے کے روز خبردار کیا کہ اس علاقے میں مستقبل قریب میں شدید طوفان "بار بار" دیکھنے کو ملیں گے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ "مسلسل بارشوں کے باعث پہاڑوں اور مٹی میں بہت زیادہ پانی جذب ہو جائے گا جو ممکنہ طور پر ثانوی آفات جیسے کہ پہاڑی سیلاب اور مٹی کے تودے گرنے کا باعث ہو گا۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں