ایرانی دھمکیوں کے پیش نظر آبنائے ہرمز میں بحری جہازوں کو مغرب کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مشرق وسطیٰ میں مغربی حمایت یافتہ بحریہ نے ہفتے کے روز تزویراتی اہمیت کی حامل آبنائے ہرمز سے سفر کرنے والی جہاز رانی کمپنیوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ ایران اور امریکہ کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی کے درمیان متنبہ رہیں اور گرفتاری سے بچنے کے لیے ایرانی علاقائی پانیوں میں نہ جائیں۔

اسی طرح کی وارننگ اس سال کے شروع میں بھی شپنگ کمپنیوں کو دی گئی تھی۔ اس سے پہلے کہ ایران نے آبنائے فارس کے تنگ حصے سے دو بحری ٹینکرز کو پکڑ لیا تھا۔ یاد رہے دنیا کا 20 فیصد تیل آبنائے ہرمز سے گزرتا ہے۔

مشرق وسطیٰ میں امریکی پانچویں بحری بیڑے کے ترجمان ٹموتھی ہاکنز نے انتباہ کو تسلیم کیا لیکن اس کے بارے میں تفصیلات بتانے سے انکار کردیا۔

ہاکنز نے کہا کہ ایک امریکی حمایت یافتہ میری ٹائم تنظیم ، جسے انٹرنیشنل میری ٹائم سیکیورٹی کنسٹرکٹ کہا جاتا ہے، موجودہ علاقائی تناؤ کی بنیاد پر پکڑے جانے کے خطرے کو کم کرنے کے لیے علاقائی بحری جہازوں کو مناسب احتیاطی تدابیر کے بارے میں مطلع کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ مشورہ دیا جاتا ہے کہ بحری جہاز ایرانی علاقائی پانیوں سے زیادہ سے زیادہ دور گزریں۔

یورپی یونین کی زیر قیادت ایک میری ٹائم تنظیم جو آبنائے میں جہاز رانی کی نگرانی کرتی ہے نے اگلے 12 سے 72 گھنٹوں کے اندر آبنائے ہرمز میں کسی نامعلوم تجارتی جہاز پر ممکنہ حملے کے بارے میں خبردار کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں