موسیقی اور کافی دماغ کے لیے کیا کام کرتی ہیں!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

نیورو سائنس نیوز نے نیچر سائنٹیفک رپورٹس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ نیو یارک یونیورسٹی کے ٹنڈن اسکول آف انجینیرنگ کے محققین کی طرف سے کی گئی ایک حالیہ تحقیق میں انکشاف کیا گیا ہے کہ موسیقی اور کافی علمی کارکردگی کو نمایاں طور پر بڑھا سکتی ہیں۔

"بِیٹا رینج"

جدید ترین MINDWATCH دماغی اسکیننگ اور مانیٹرنگ ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے مطالعہ نے مختلف محرکات کے تحت علمی ٹیسٹوں کے دوران دماغی سرگرمی کی نگرانی کی گئی جس میں موسیقی سننے، کافی پینے اور خوشبو سونگھنے کے اثرات کاجائزہ لیا گیا۔

نتائج نے بیٹا بینڈ دماغی لہر کی سرگرمی میں اضافے کا بھی اشارہ کیا جو کہ اعلی علمی کارکردگی سے منسلک ہے۔ جب لوگ موسیقی سننے یا کافی پینے میں مصروف تھے تو ان کی علمی استعداد میں اضافہ نوٹ کیا گیا۔

مائینڈوچ ٹیکنالوجی

NYU کے سکول آف بائیو میڈیکل انجینیرنگ کے پروفیسر روز فقیہ نے پچھلے چھ سالوں میں دماغ کی نگرانی کرنے والی ٹیکنالوجی MINDWATCH تیار کی ہے۔

یہ ٹیکنالوجی ایک الگورتھم ہے جو کسی بھی پہننے کے قابل ڈیوائس کے ذریعے جمع کیے گئے ڈیٹا سے کسی شخص کی دماغی سرگرمی کا تجزیہ کرتی ہے جو EDA الیکٹریکل جلد کی سرگرمی کی نگرانی کر سکتی ہے۔ یہ سرگرمی پسینے کے ردعمل سے وابستہ جذباتی تناؤ کی وجہ سے برقی رو میں تبدیلی کی عکاسی کرتی ہے۔

دماغی سرگرمی کو متحرک کرنا اور یادداشت کو تبدیل کرنا

مطالعہ کے شرکاء نے موسیقی سننے، کافی پینے اور ان کی انفرادی ترجیحات کی عکاسی کرنے والی خوشبوؤں کو سونگھنے کے دوران علمی ٹیسٹ کرنے کے لیے الیکٹریکل ایکٹیویٹی مانیٹرنگ کرنے والے کلائی بینڈ اور دماغی نگرانی کے بینڈ پہنے۔ انہی ٹیسٹوں کو بغیر کسی محرک کے دہرایا گیا اوران میں موسیقی، کافی یا پرفیوم کے اثرات کی جانچ کی گئی۔

MINDWATCH الگورتھم نے انکشاف کیا کہ موسیقی اور کافی نے شرکاء کے دماغی ارتعاش کو ناپے سے تبدیل کر دیا۔ بنیادی طور پر انہیں ایک جسمانی "ذہنی حالت" میں ڈال دیا جو ان کی کارکردگی کو میموری کے کام کرنے والے کاموں پر تبدیل کر سکتا ہے جو وہ انجام دے رہے تھے۔

محققین نے قطعی طور پر اس بات کی نشاندہی کی کون سے محرکات بیٹا بینڈ میں دماغی لہر کی سرگرمی میں اضافہ کا سبب بنتے ہیں۔ یہ حالت اعلی علمی کارکردگی سے وابستہ ہے۔ یہ نتیجہ اخذ کیا گیا کہ پرفیوم کا مثبت اثر معمولی تھا جو مزید مطالعہ کی ضرورت کی نشاندہی کرتا ہے۔

کورونا وبا کے منفی اثرات

ڈاکٹر فقیہ نے کہا کہ"وبائی بیماری نے دنیا بھر میں بہت سے لوگوں کی ذہنی صحت کو متاثر کیا ہے اور اب پہلے سے کہیں زیادہ، کسی فرد کے علمی فعل پر روزانہ دباؤ کے منفی اثرات کی نگرانی کرنے کی ضرورت ہے۔"

"ابھی MINDWATCH ٹیکنالوجی بھی ترقی کے مراحل میں ہے، لیکن حتمی مقصد یہ ہے کہ یہ ٹیکنالوجی میں حصہ ڈالے گی جو ایک شخص کو حقیقی وقت میں اپنے دماغ کے علمی ارتعاش کی نگرانی کرنے کی اجازت دے سکتی ہے۔ مثال کے طور پر شدید تناؤ یا علمی تناؤ کے لمحات کا پتہ لگانا وغیرہ۔

بہتر ملازمت اور اسکول کی اسائنمنٹس

فقیہ نے کہا کہ اہم ٹیکنالوجی کا استعمال "کسی شخص کو سادہ اور محفوظ مداخلتوں کی طرف دھکیلنے کے لیے کیا جا سکتا ہے۔ ان میں شاید موسیقی سننا بھی ہے تاکہ وہ اپنے آپ کو ایسی ذہنی حالت میں رکھ سکیں جس میں وہ بہتر محسوس کر سکیں اور ملازمت یا اسکول کے کام زیادہ کامیابی سے انجام دے سکیں۔ "

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں