ہوائی کی جلی ہوئی لاشیں اور ساحل سمندر پر بائیڈن کی ویڈیو، امریکی برہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی ریاست ہوائی میں لگی آگ اب بھی درختوں کو جڑوں تک جلا کر راکھ بنا رہی ہے، اور مکانات سے جلی ہوئی لاشیں نکالی جا رہی ہیں، ایسے میں امریکی صدر جو بائیڈن کے اپنے ساتھیوں کے ساتھ ساحل سمندر پر لطف اندوز ہونے کے مناظر نے کئی امریکیوں کو شدید برہم کیا۔

جو بائیڈن ڈیلاویئر کے ریہوبوتھ بیچ پر سورج کی گرمی اور سمندر کے نظارے سے لطف اندوز ہوتے ہوئے اور مشروبات پیتے نظر آئے۔

بہت سے لوگوں نے اس وقت ان کے اس طرزعمل پر شدید غصے اور تنقید کا اظہار کیا، جب کہ ملک کی ایک ریاست تاریخ کی بدترین آفت سے گزر رہی ہے، اور امریکی جزیرے میں مرنے والوں کی تعداد 92 سے زیادہ ہو گئی ہے۔

امریکی صدر جب وہ وہاں سے روانہ ہوئے تو متعدد صحافیوں نے انہیں آلیا اور ہوائی میں ہلاکتوں کی زیادہ تعداد کے حوالے سے سوالات کی بوچھاڑ کردی، تاہم ، جو بائیڈن نے"کوئی تبصرہ نہیں" کہتے ہوئے خاموش رہنے کو ترجیح دی۔

یہ واقعہ اس وقت سامنے آیا جب امریکی ریاست ہوائی کے جزیرے ماوی کے حکام نے اپنی ویب سائٹ پر اعلان کیا کہ اس کے جنگلات میں لگنے والی آگ سے مرنے والوں کی تعداد 93 ہو گئی ہے۔

امریکہ کے جنگلات میں ہونے والی آتش زدگی کا اس صدی کا سب سے مہلک واقعہ ہے۔

حکام کے مطابق مرنے والوں کی تعداد میں اضافے کا امکان ہے، کیونکہ تلاش کرنے والی ٹیمیں تربیت یافتہ کتوں کی مدد سے ساحلی قصبے لہینا کے جلے ہوئے کھنڈرات میں تلاش کر رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں