باسکٹ بال خاتون کھلاڑی کو ہراساں کرنے پر مشہور مصری فنکار منشیات سمیت گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

منشیات رکھنے کے الزام میں گرفتار کیے جانے کے بعد مصری حکام نے پیر کو ایک مشہور فنکار کو مواصلاتی سائٹس کے ذریعے خاتون باسکٹ بال کھلاڑی کی توہین کرنے اور بدنام کرنے کے الزام میں قید کی سزا پر عمل درآمد کے لیے گرفتار کر لیا۔

خاتون کھلاڑی کے وکیل عمرو عبدالسلام نے ’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو بتایا کہ ان کی مؤکل یاسمین ابراہیم ایک مصری باسکٹ بال کھلاڑی نے اپیل اکنامک کورٹ سے مذکورہ آرٹسٹ کو دو سال قید کی سزا کا حکم حاصل کیا ہے۔ یہ سزا سوشل میڈیا کے ذریعے توہین اور بدزبانی کی بنا پر سنائی گئی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اداکار آج اپنی گرفتاری کے بعد اقتصادی عدالت میں کیس میں نظربندی کے فارم پر دستخط کرنے کے لیے موجود تھے۔ انہیں جیل بھیجنے اور سزا پر عمل درآمد کی تیاری کی جارہی تھی۔

یاسمین ابراہیم ہوٹلوں کے ایک گروپ کی مالک ہیں اور مصری باسکٹ بال کی ایک سابق کھلاڑی ہیں۔ انہوں نے آرٹسٹ کے خلاف ایک مقدمہ دائر کیا تھا جس میں آرٹسٹ پر توہین، بہتان تراشی کا الزام لگایا۔ اس کی زندگی اور اس کے خاندان کو بے نقاب کرنے اور نقصان پہچانے کا الزام بھی لگایا تھا۔

انہوں نے کہا کہ مشہور اداکار نے سوشل میڈیا کے ذریعے باسکٹ بال کھلاڑی کو بدنامی اور بدسلوکی کا نشانہ بنایا اور اس نے واٹس ایپ اور انسٹاگرام ایپلی کیشنز کے ذریعے ایسے پیغامات بھیجے جن میں بد زبانی شامل تھی۔

باسکٹ بال کھلاڑی نے انکشاف کیا کہ اس نے شادی کرنے کی درخواست پر انکار کر دیا تھا۔ اس انکار کے بعد مصری فنکار نے واٹس ایپ کے ذریعے خط لکھا اور دھمکیاں دیں۔ وہ رابطہ کرکے مجھے ہراساں کرتا اور میر توہین کرتا تھا۔

گزشتہ روز مصری سکیورٹی سروسز نے اس فنکار کو چرس رکھنے کا الزام لگاتے ہوئے اس وقت گرفتار کیا جب وہ ملک کے شمال میں واقع مارسا ماتروح کے ایک سیاحتی مقام پر تھا۔ یاد رہے مئی 2021 میں بھی عدالت نے ملزم کو دو سال قید کی سزا سنائی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں