روس اور یوکرین

ایف 16جنگ میں شدت لائیں گے:روس؛طیاروں سے یوکرین کے حق میں توازن قائم ہوگا:کِیف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روس نے خبردار کیا ہے کہ ڈنمارک اور نیدرلینڈز کی جانب سے یوکرین کو ایف 16 لڑاکا طیارے عطیہ کرنے کے فیصلے سے تنازع میں مزید شدت آئے گی جبکہ یوکرین کا کہنا ہے کہ ان طیاروں سے ماسکو کی برپا کردہ جنگ کو ختم کرنے میں مدد ملے گی۔

ڈنمارک اور نیدرلینڈز نے اتوار کے روز اعلان کیا ہے کہ وہ یوکرین کو ایف 16 طیارے مہیّا کریں گے جبکہ ابتدائی طور پر چھے طیارے نئے سال کے آس پاس یوکرین بھیجے جائیں گے۔ واشنگٹن نے گذشتہ ہفتے امریکی ساختہ طیارے تیسرے ملک (یوکرین) میں بھیجنے کی منظوری دی تھی۔

روس کے سفیر ولادی میر باربن نے ایک بیان میں کہا کہ ڈنمارک نے یوکرین کو 19 ایف 16 طیارے عطیہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے تنازع کو بڑھاوا ملے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ ’’اس خیال کے پیچھے چھپ کر کہ یوکرین کو امن کی شرائط کا تعین خود کرنا ہے، ڈنمارک اپنے اقدامات اور الفاظ کے ذریعے یوکرین کے لیے روس کے ساتھ فوجی محاذ آرائی جاری رکھنے کے سوا کوئی چارہ کار نہیں چھوڑنا چاہتا‘‘۔

دوسری جانب یوکرین کا کہنا ہے کہ امریکی ساختہ طیارے روسی افواج کو اس کی سرزمین سے بھگانے کی کوشش کی کامیابی کے لیے اہم ہیں کیونکہ یہ لڑاکا جیٹ روسی طیاروں کو پیش قدمی کرنے والی یوکرینی افواج پر حملے سے روکے گا۔

یوکرین کے ذرائع ابلاغ نے فضائیہ کے ترجمان یوری اہنات کے حوالے سے بتایا کہ ’’فضا میں برتری زمین پر کامیابی کی کلید ہے‘‘۔

ڈنمارک کے وزیر دفاع جیکب ایلمین جینسن نے وضاحت کی ہے کہ یوکرین عطیہ کیے گئے ایف 16 طیارے صرف اپنے علاقے میں استعمال کر سکتا ہے۔ہم اس شرط پر ہتھیار عطیہ کرتے ہیں کہ وہ دشمن کو یوکرین کی سرزمین سے باہر نکالنے کے لیے استعمال ہوں۔ اور اس سے آگے کچھ نہیں‘‘۔

انھوں نے کہا:’’یہ صورت حال ہے، چاہے وہ ٹینک ہوں، لڑاکا طیارے ہوں یا کچھ اور‘‘۔

ڈنمارک مجموعی طور پریوکرین کو 19 طیارے مہیّا کرے گا۔ نیدرلینڈز کے پاس 42 ایف 16 طیارے موجود ہیں لیکن اس نے ابھی تک یہ فیصلہ نہیں کیا ہے کہ آیا ان سب کو عطیہ کیا جائے گا یا نہیں لیکن وہ یہ تمام طیارے بھی یوکرین کومہیّا کر سکتا ہے کیونکہ اس کی مسلح افواج نئے ایف 35 لڑاکا طیاروں کو حاصل کررہی ہیں۔

یوکرین کے صدر ولودی میر زیلنسکی نے اس فیصلے کو ایک 'اہم معاہدہ' قرار دیا ہے۔یوکرین کے وزیر دفاع اولیکسی ریزنکوف نے ہفتے کے روز کہا تھا کہ یوکرین کے پائلٹوں نے طیارے اڑانے کی تربیت شروع کر دی ہے لیکن انجینئروں اور مکینکوں کو تربیت دینے میں کم سےکم چھ ماہ اور ممکنہ طور پر اس سے بھی زیادہ وقت لگے گا۔

یوکرین نے توقع ظاہر کی ہے کہ اس کےدرجنوں پائلٹوں کو تربیت دی جائے گی۔تاہم اس نے گذشتہ ہفتے کہا تھا کہ اسے یہ توقع نہیں کہ وہ اس موسم خزاں یا موسم سرما میں ایف-16 لڑاکا جیٹ استعمال کرنے کے قابل ہو جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں