برطانیہ: 7 شیر خوار بچوں کو قتل کرنیوالی نرس کو عمر قید سنادی گئی

لوسی لیٹی نے 2015 میں 5 لڑکوں اور 2 لڑکیوں کو انسولین کا انجکشن لگا کر یا زبردستی دودھ پلا قتل کیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ میں ایک جج نے سیریل کلر نرس لوسی لیٹبی کو 7 نومولود بچوں کو قتل کرنے اور 6 دیگر کو قتل کرنے کی کوشش کا مجرم پانے کے بعد عمر قید کی سزا سنا دی ہے۔

33 سالہ لیٹبی نے 2015 سے 13 ماہ کے عرصے کے دوران شمالی انگلینڈ کے کاؤنٹیس آف چیسٹر ہسپتال کے نوزائیدہ یونٹ میں پانچ لڑکوں اور دو لڑکیوں کو انسولین کا انجیکشن لگا کر یا ان کے منہ میں زبردستی دودھ ڈال کر قتل دیا تھا۔

قتل کیے جانے والوں بچوں میں جڑواں بچے بھی شامل تھے۔ لیٹبی نے ایک کیس میں دو بھائیوں کو مار ڈالا۔ دوسرے کیس میں اکٹھے تین پیدا ہونے والوں میں سے دو کو مارا۔ دو دیگر معاملات میں اس نے جڑواں بچوں میں سے ایک کو مار ڈالا لیکن دوسرے جڑواں کو مارنے کی کوشش میں ناکام رہی تھی۔

جج جیمز گوس نے کہا کہ یہ بچوں کے قتل کا ایک سفاکانہ، منصوبہ بند اور بدنیتی پر مبنی سلسلہ تھا۔ اس معاملہ میں سب سے کم عمر اور سب سے زیادہ کمزوروں کو نشانہ بنایا گیا۔ جج نے کہا آپ کے حرکتوں میں انتہائی نفرت شامل ہے جو افسوس کی سرحد سے جڑی ہوئی ہے، آپ کو کوئی پچھتاوا بھی محسوس نہیں ہوتا ہے۔

یاد رہے برطانیہ میں عمر قید کی سزائیں بہت کم ہوتی ہیں۔ دو سیریل کلرز مائرا ہندلے اور روزمیری ویسٹ سمیت صرف تین خواتین کو یہ سزائیں ہوئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں