روس میں بغاوت

روس نے فضائیہ کے سربراہ سروویکِن کو تبدیل کر دیا ہے جو واگنر بغاوت کے بعد غائب ہو گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ریاستی آر آئی اے نیوز ایجنسی نے بدھ کو رپورٹ دی ہے کہ روس نے جنرل سرگئی سروویکِن کی جگہ اپنی فضائی اور خلائی افواج کا نیا قائم مقام سربراہ مقرر کیا ہے جو جون میں اعلیٰ روسی حکام کے خلاف کرائے کی ایک مختصر واگنر بغاوت کے بعد نظروں سے غائب ہو گئے تھے۔

جون 23-24 کی بغاوت کے دوران سروویکِن جنہوں نے کبھی یوکرین میں روس کی مجموعی جنگی کوششوں کی کمانڈ کی تھی - جسے ماسکو "خصوصی فوجی آپریشن" کہتا ہے - ایک ویڈیو میں سامنے آئے جس میں وہ غیر پرسکون اور فوج کی سرکاری علامت کے بغیر نظر آ رہے تھے۔ اس وڈیو میں انہوں نے واگنر کے کرائے کے رہنما یوگینی پریگوزن پر (بغاوت سے) دستبردار ہونے پر زور دیا۔

یہ بغاوت جو مذاکرات اور ایک معاہدے کے ذریعے ختم ہو گئی تھی، کے بعد سے غیر مصدقہ روسی اور غیر ملکی خبر رساں اداروں نے کہا ہے کہ سروویکِن سے ممکنہ طور پر بغاوت میں ملوث ہونے کی تحقیقات جاری ہیں اور وہ گھر میں نظر بند ہیں۔

ایک نامعلوم ذریعہ نے آر آئی اے کو بتایا، "روسی فضائی اور خلائی افواج کے سابق سربراہ سرگئی سروویکِن کو اب عہدے سے فارغ کر دیا گیا ہے جب کہ فضائیہ کے مین اسٹاف کے سربراہ کرنل جنرل وکٹر افضل عارضی طور پر فضائیہ کے کمانڈر انچیف کے طور پر کام کر رہے ہیں۔"

سورویکن نے شام میں روس کی فوجی مداخلت کے دوران "جنرل آرماگیڈن" کا لقب حاصل کیا۔

انہیں گذشتہ اکتوبر میں یوکرین میں روسی فوجی آپریشنز کا انچارج بنایا گیا تھا لیکن جنوری میں یہ ذمہ داری جنرل اسٹاف کے چیف جنرل ویلری گیراسیموف کو سونپی دی گئی اور سروویکن کو گیراسیموف کا نائب بنا دیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں