افغانستان وطالبان

طالبان نے پاسداران انقلاب کی نیوز ایجنسی کا فوٹوگرافر گرفتار کر لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایرانی سپاہِ پاسداران انقلاب سے وابستہ ایک نیوز ایجنسی نے بتایا کہ "طالبان" فورسز نے اس کے عملے میں شامل سے ایک فوٹوگرافر کو گرفتار کیا ہے جو "ذاتی سفر" پر کابل گیا تھا۔

تسنیم ایجنسی نے کہا کہ طالبان فورسز نے اس کے کیمرہ مین محمد حسین ولایتی کو گذشتہ ہفتے کے روز کابل کے ہوائی اڈے سے گرفتار کر لیا۔ گرفتاری کی وجوہات سامنے نہیں آئیں۔

ایجنسی نے "طالبان" کو ایک انتباہ میں کہا کہ "ایرانی صحافیوں کے ساتھ (طالبان) کے برتاؤ پر ایرانیوں کے منفی رویے کو دیکھتے ہوئے تحریک سے توقع ہے کہ وہ ایرانی فوٹوگرافر کو جلد رہا کر دے گی۔"

8 اگست 1998 کو مزار شریف میں ’ارنا‘ نیوز ایجنسی کے نامہ نگار سمیت ایرانی قونصل خانے کےعملے کے آٹھ ارکان کے قتل کے بعد تہران اور طالبان کے درمیان تعلقات برسوں سے خراب ہوتے چلے آ رہے ہیں۔

ایجنسی کے مطابق اس کے فوٹوگرافر نے دس دن کابل میں ایک "ذاتی سفر" پر گزارے۔ اسے ہفتہ کو افغان دارالحکومت کے ہوائی اڈے پر روکا گیا، جب وہ تہران واپس جا رہے تھے۔

ایرانی سفارتخانے کے ناظم الامور حسین کاظمی قومی نے کہا کہ ان کی ٹیم گرفتار فوٹوگرافر کے معاملے پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے"طالبان" حکومت کی انٹیلی جنس سروس سے رابطہ کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں