واگنر کے سربراہ پریگوژن کے طیارے کے حادثے کے پیچھے پوتین کا ہاتھ ہو سکتا ہے:جوبائیڈن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن نے خیال ظاہر کیا ہے کہ اس طیارہ حادثے میں روس کے ولادیمیر پوتین کا ہاتھ ہو سکتا ہے جس میں مبینہ طور پر واگنر بغاوت کے سربراہ یوگینی پریگوژن بدھ کے روز ہلاک ہو گئے تھے۔

بائیڈن نے نامہ نگاروں کو بتایا۔ "روس میں ہونے والی کئی باتیں ایسی نہیں ہیں جس میں پوتین کا ہاتھ نہ ہو۔ لیکن اس کا جواب جاننے کے لیے میرا علم کافی نہیں۔"

جب میڈیا ذرائع نے بتایا کہ پریگوژن اس پرواز میں تھے جو ماسکو سے سینٹ پیٹرزبرگ جا رہی تھی تو بائیڈن کو اس خبر کے بارے میں کچھ ہی دیر بعد بتا دیا گیا۔

بغاوت کے زرخرید سربراہ پریگوژن جو کبھی پوتین کے قریبی ساتھی تھے، اس ہفتے کے اوائل میں افریقہ سے جاری ہونے والی ایک ویڈیو میں سامنے آئے۔ جون میں روسی فوج کے خلاف ناکام بغاوت کے بعد پریگوزن ملک سے فرار ہو گئے تھے۔

امریکی حکام نے کہا کہ اگر پریگوژن کی موت کی اطلاعات درست ہیں تو انہیں حیرت نہیں ہوگی۔

ویگنر سے وابستہ میڈیا نے دعویٰ کیا کہ نجی جیٹ طیارے کو روسی وزارتِ دفاع نے مار گرایا۔

وائٹ ہاؤس کی قومی سلامتی کونسل کے ترجمان نے کہا۔ "ہم نے رپورٹیں دیکھی ہیں۔ اگر ان کی تصدیق ہو جاتی ہے تو کسی کو حیران نہیں ہونا چاہیے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں