روبیئلز مزید رک جاؤ: بوسہ کے بعد ہسپانوی خاتون فٹبال کھلاڑی ہرموسو پھٹ پڑیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سپین میں پروفیشنل فٹ بال پلیئرز کی فیڈریشن نے بدھ کے روز انکشاف کیا کہ ہسپانوی قومی ٹیم کی کھلاڑی جینی ہرموسو نے ہسپانوی فٹ بال فیڈریشن کے صدر لوئیس روبیئلز کے خلاف احتیاطی اقدامات کا مطالبہ کردیا۔ ورلڈ کپ جیتنے کے موقع پر روبیئلز نے جشن کے دوران بظاہر خوشی میں کھلاڑی ہرموسو کو سب کے سامنے بوسہ دے دیا تھا۔

اتوار کو فائنل میں سپین نے انگلینڈ کو زیرو ایک سے شکست دی تھی۔ ہسپانوی قومی ٹیم کے لیے گولڈ میڈل تقسیم کرنے کی تقریب کے دوران روبیلز نے کھلاڑی ہرموسو کے منہ پر بوسہ دیا تھا۔ اس عمل پر سپین کے اندر اور باہر بڑے پیمانے پر غم و غصے کی لہر دوڑ گئی۔ وزرا اور کھلاڑیوں سمیت بڑی تعداد میں لوگوں نے روبیئلز نے مستعفی ہونے مطالبہ کیا ہے۔

ہرموسو نے ڈبلیو ٹی اے اور اپنی ایجنسی کے ذریعہ شائع مشترکہ بیان میں کہا کہ میں اپنی فیڈریشن اور اپنی ایجنسی کے تعاون سے اپنا دفاع کر رہی ہوں۔ انہوں نے اس معاملے میں میری نمائندگی کرنے والے مکالمے کی حیثیت سے ذمہ داری قبول کی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کام کر رہے ہیں کہ اس طرح کی کارروائیوں کے مرتکب افراد سزا سے بچ نہ سکیں اور انہیں سزا ملے ۔ خواتین فٹبالرز کو ایسے اقدامات سے بچانے کے لیے روک تھام کے ایسے اقدامات کیے جائیں جو ہمارے خیال میں ناقابل قبول ہیں۔

روبیئلز نے پیر کو ایک ویڈیو کلپ میں معافی مانگنے سے پہلے ابتدائی طور پر اس واقعے کے بارے میں اٹھائے گئے سوالات کو احمقانہ قرار دیا تھا لیکن اس کے بعد بھی تنقید کا سلسلہ نہ رکا تو انہوں نے معافی مانگی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں