واگنر سربراہ کے طیارے میں دھماکہ خیز ڈیوائس تھی، ذاتی پائلٹ ملوث: روسی رپورٹ

یوگینی پریگوژن کی لاش فرانزک دفتر میں ہے۔ ماسکو میں تحقیقات جاری ہیں، اور تحقیقاتی کمیٹی تمام منظر ناموں کا مطالعہ کر رہی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

واگنر گروپ کے بانی یوگینی پریگوژن کو لے جانے والے طیارے کے حادثے اور ان سمیت تمام 10 مسافروں کی ہلاکت آج جمعرات کو بھی خبروں اور شہ سرخیوں پر چھائے ہیں جب کہ حادثے کی تحقیقات جاری ہیں۔

تازہ ترین پیش رفت میں، ماسکو میں موجود "العربیہ" اور "الحدث" کے نامہ نگاروں نے اطلاع دی ہے کہ ابتدائی تحقیقاتی رپورٹوں میں پریگوزن کے طیارے میں دھماکہ خیز مواد نصب ہونے کا انکشاف کیا گیا ہے۔

یہ اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ پریگوزین کے طیارے کے حادثے کا پہلا مشتبہ شخص اس کا ذاتی پائلٹ تھا کیونکہ وہ جہاز کی جانچ کرنے والا آخری شخص تھا۔

رپورٹر نے تصدیق کی کہ پریگوزن کی لاش فرانزک دفتر میں حفاظتی حصار ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ روسی تحقیقاتی کمیٹی طیارے کے اندر سے ہونے والے دھماکے سمیت تمام منظرناموں کا مطالعہ کر رہی ہے۔

اور اس سے پہلے العربیہ اور الحدث کے نمائندے نے کہا کہ روسی سکیورٹی فورسز نے پریگوزن طیارہ گرنے والے علاقے کو بند کر دیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پریگوزن کے طیارے کا ملبہ دو کلومیٹر سے زیادہ علاقے تک پھیلا ہوا ہے، اور اس مقام پر تحقیقات جاری ہیں۔

روسی ایوی ایشن ایجنسی کے اعلان کے بعد کہ ماسکو کے قریب گر کر تباہ ہونے والے بدقسمت طیارے میں واگنر رہنما سوار تھے، واگنر سے منسلک "ٹیلی گرام" چینل نے بدھ کی شام کمانڈر کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

"گرے زون" چینل پر ایک پوسٹ میں کہا گیا: "واگنر گروپ کا سربراہ... روس کا ایک ہیرو... اپنی مادر وطن کا سچا محب وطن... یوگینی وکٹورووچ پریگوزن غداروں کی کارروائیوں کے نتیجے میں جاں بحق ہوگیا۔"

اس کے علاوہ، روسی ایئر ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے تصدیق کی کہ طیارے میں سوار تمام افراد ہلاک ہو گئے۔

دریں اثنا، بولوگوسک میونسپلٹی کے یونیفائیڈ ڈیوٹی ڈپارٹمنٹ نے اعلان کیا کہ حادثے کی جگہ پر پہنچنے والے امدادی کارکنوں نے ملبے سے سات لاشیں نکال لی ہیں۔

خیال رہے کہ 62 سالہ پریگوزین نے 23 اور 24 جون کو روسی فوج کے رہنماؤں کے خلاف بغاوت کی قیادت کی تھی، اس بغاوت کے بارے میں روسی صدر ولادیمیر پوتن نے کہا تھا کہ روس کو خانہ جنگی میں جھونک دے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں