روس اور یوکرین

روس کا کریمیا میں 42 یوکرینی ڈرون تباہ کرنے کا اعلان اور ایف سولہ پائلٹوں کی تربیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روسی یوکرینی محاذ پر آج جمعہ کو فوجی کارروائیاں جاری ہیں، روسی فوج زمین پر مزید فوائد حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے، جب کہ یوکرین کی افواج مغربی فوجی مدد سے مزاحمت جاری رکھے ہوئے ہیں۔

تازہ ترین پیشرفت میں، روسی وزارت دفاع نے جمعہ کو صبح ایک غیر معمولی حملے کا اعلان کیا اور کہا کہ اس نے کریمیا میں 42 یوکرینی ڈرون مار گرائے ہیں۔

وزارت نے "ٹیلی گرام" پر کہا کہ"جمہوریہ کریمیا کی سرزمین پر 9 ڈرون تباہ کر دیے گئے۔ 33 ڈرونز کو الیکٹرانک وارفیئر کے ذریعے بے اثر کر دیا گیا، اور وہ اپنے ہدف تک پہنچے بغیر ہی تباہ ہو گئے۔" وزارت نے ڈرون کی تباہی کے نتیجے میں کسی زخمی یا نقصان کے بارے میں معلومات فراہم نہیں کیں۔

روسی حکام نے جمعہ کو صبح یہ بھی اعلان کیا کہ یوکرین کا ایک "ایس-200" میزائل مار گرایا گیا، جو کالوگا کے علاقے میں "شہری اہداف" کو نشانہ بنا رہا تھا۔ وزارت دفاع نے کہا کہ "روسی فیڈریشن کی سرزمین پر شہری اہداف کے خلاف حملہ کرنے کی کیف کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا"۔ اس میں مزید کہا گیا ہے کہ "میزائل کو روسی دارالحکومت کے جنوب مغرب میں کالوگا کے علاقے میں فضائی دفاعی نظام نے تلاش کر کے اسے تباہ کر دیا"۔

قبل ازیں جمعرات کو، یوکرین نے اعلان کیا کہ اس کی خصوصی افواج نے کریمیا میں ایک کوالیٹیٹیو فوجی آپریشن شروع کیا، جس کے نتیجے میں متعدد روسی فوجی ہلاک ہوئے۔

یہ پیش رفت ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب امریکی محکمہ دفاع نے جمعرات کو اعلان کیا تھا کہ امریکہ ستمبر میں یوکرینی پائلٹوں کو ایف سولہ لڑاکا طیاروں کو اڑانے کی تربیت دینا شروع کرے گا۔

پینٹاگون کے ترجمان جنرل پیٹ رائڈر نے کہا کہ "یہ پائلٹ ستمبر میں ٹیکساس میں انگریزی زبان کی تربیت حاصل کریں گے" اس کے بعد وہ اگلے مہینے ایریزونا میں تربیت میں حصہ لیں"۔

امریکی ترجمان کا یہ بیان ناروے کے اس اعلان کے بعد سامنے آیا تھا کہ وہ یوکرین کو ان امریکی ساختہ طیاروں کی ایک بڑی تعداد فراہم کرے گا۔

ناروے نے یہ نہیں بتایا کہ وہ یوکرین کو کتنے طیارے فراہم کرے گا، لیکن ڈنمارک نے کہا کہ وہ یوکرین کو 19 طیارے فراہم کرے گا، جب کہ یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی کے مطابق نیدرلینڈ اسے 42 طیارے دے گا۔

جنرل رائڈر کے مطابق، یوکرین کے پائلٹوں کو تربیت دینے میں پانچ سے آٹھ ماہ لگ سکتے ہیں جو ان کی موجودہ مہارتوں پر منحصر ہے۔

ترجمان نے وضاحت کی کہ ''ان طیاروں کو اڑانے کے لیے درکار پیچیدگیوں اور انگریزی اصطلاحات کے پیش نظر،تربیت شروع کرنے سے پہلے یوکرین کے پائلٹوں کو انگریزی زبان میں تربیت دینا ضروری ہے، "

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ یہ تربیت کرے گا کیونکہ ڈنمارک اور ہالینڈ کے لیے تمام تیاری کا انتظام کرنا ناممکن ہے۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق امریکی صدر جو بائیڈن نے جمعرات کو زیلنسکی سے امریکی تربیت کے بارے میں بات کی ہے

اور تربیت کے بعد اپنے طیاروں کو یوکرین منتقل کرنے کے لیے فوری منظوری کو یقینی بنانے پر تبادلہ خیال کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں