امریکا:بیس بال میچ کے دوران میں فائرنگ سے دو عورتیں زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے شہر شکاگو میں بیس بال کے ایک میچ کے دوران میں دو خواتین شائقین کو گولی مار کر زخمی کر دیا گیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ یہ امریکا کو ہلا کر رکھ دینے والے گن سے تشدد کا تازہ واقعہ ہے، جہاں آتشیں اسلحہ کی تعداد لوگوں سے زیادہ ہے۔

پولیس کے مطابق دونوں شائقین کو گارنٹیڈ ریٹ فیلڈ کے اندر گولی ماری گئی جہاں 22 ہزار کے قریب افراد شکاگو وائٹ سوکس اور اوکلینڈ ایتھلیٹکس کا میچ دیکھ رہے تھے۔

سٹی پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ 42 سالہ عورت کو یونیورسٹی آف شکاگو میڈیکل سنٹر منتقل کیا گیا۔ اس کی ٹانگ میں گولی لگی تھی اور اسپتال میں اس کی حالت بہتر تھی۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’’ایک 26 سالہ خاتون نے پیٹ پر معمولی زخم کے بعد طبی امداد لینے سے انکار کر دیا‘‘۔

وائٹ سوکس نے ایک بیان میں کہا کہ یہ واضح نہیں ہے کہ متاثرین کو بال پارک کے اندر سے گولی ماری گئی تھی یا باہر سے۔ٹیم نے مزید کہا کہ پولیس کی تحقیقات جاری ہے اور وہ دونوں خواتین کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہیں۔

وائٹ سوکس نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ فائرنگ کسی توتکار کا نتیجہ نہیں ہے۔اس اچانک واقعہ کے باوجود بیس بال کا کھیل جاری رہا ، وائٹ سوکس کو آخر کار 12-4 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

اس میچ کے بعد ریپرز ونیلا آئس اور ٹون لوک پر مشتمل کنسرٹ تکنیکی مشکلات کی بنا پر منسوخ کر دیا گیا تھا۔

ایک غیر سرکاری تنظیم گن وائلنس آرکائیو کے مطابق امریکا میں رواں سال فائرنگ کے 467 واقعات ریکارڈ کیے گئے ہیں۔فائرنگ کے واقعہ کی تعریف میں یہ کہا گیا ہے کہ اس میں چار یا اس سے زیادہ افراد زخمی یا ہلاک ہوئے ہوں۔

امریکا میں اسلحہ پر کنٹرول کو سخت کرنے کی کوششیں برسوں سے ری پبلکنز کی مخالفت کی بنا پرجاری ہیں اور ہتھیار اٹھانے کے آئینی حق کے سخت محافظ ہیں۔امریکا میں آئے دن فائرنگ کے واقعات پر بڑے پیمانے پر غم و غصے کی لہر کے باوجود سیاسی تعطل برقرار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں