سعودی عرب اور ترکیہ کا جی 20 اجلاس میں دوطرفہ تجارتی تعلقات کے فروغ پر تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ اور سعودی عرب نے بھارت میں منعقدہ گروپ بیس کے اجلاس کے موقع پر دوطرفہ تجارت کو بڑھانے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا ہے جبکہ ترک صدر رجب طیب ایردوآن دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے اور اپنے ملک کی مشکلات سے دوچار معیشت کے لیے زیادہ سے زیادہ غیر ملکی سرمایہ کاری راغب کرنے کے خواہاں ہیں۔

ترکیہ کی وزارتِ تجارت کی جانب سے ہفتے کے روز جاری کردہ ایک بیان کے مطابق وزیر تجارت عمر بولات نے اپنے سعودی ہم منصب ماجد القصبی سے بھارت کے شہر جے پور میں جی 20 ممالک کے وزرائے تجارت کے اجلاس کے موقع پر ملاقات کی ہے۔

ترکیہ اور سعودی عرب کے درمیان دوطرفہ تعلقات میں گذشتہ دو سال کے دوران میں نمایاں بہتری آئی ہے اور دوطرفہ کوششوں کے نتیجے میں یہ مسلسل مضبوط ہو رہے ہیں۔سعودی عرب نے جولائی میں ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور صدر طیب ایردوآن کے درمیان ملاقات کے بعد ترکیہ سے گوشت اور ڈیری مصنوعات کی درآمد دوبارہ شروع کرنے پر اتفاق کیا تھا۔

ترک وزارتِ تجارت کے بیان کے مطابق وزیرتجارت نے بتایا کہ ’’ہم نے سعودی عرب کے ویژن 2030 کے دائرہ کار میں دوطرفہ تجارت، کنٹریکٹ سروسز، تعاون کے مواقع جیسے امور پر مخصوص اقدامات کا جائزہ لیا۔ ہمیں یقین ہے کہ ہم اپنے ممالک کے درمیان اعلیٰ سطح کے تعاون کے مطابق اپنے تجارتی تعلقات کو مزید فروغ دیں گے‘‘۔

ترکیہ حال ہی میں متحدہ عرب امارات سمیت دیگر عرب ممالک کے ساتھ بھی تعلقات کی بہتری کے لیے اقدامات پر عمل پیرا ہے اور وزیرتجارت عمر بولات نے متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ تجارت ثانی الزیودی سے بھی جے پور میں سرمایہ کاری اور تجارت بڑھانے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں