امریکی ارکان ایوان نمائندگان کا شمالی شام کا غیر معمولی دورہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک غیر معمولی دورے پر امریکی ایوان نمائندگان کے تین ارکان شمالی شام کے ایک ایسے علاقے میں پہنچ گئے جس پر ترکیہ کے حمایت یافتہ اپوزیشن دھڑوں کا کنٹرول ہے۔جو ولسن، وکٹوریہ سپارٹز اور ڈین فلپس نے ترکیہ سے باب السلامہ بارڈر کراسنگ کے ذریعے آنے والے حلب گورنری میں شہر ازاز کے ایک ہسپتال کا دورہ کیا۔ ان ان کا استقبال ایک بینر کے ساتھ کیا گیا تھا جس پر "آزاد شام میں خوش آمدید" لکھا ہوا تھا۔ اس موقع پر شام کے جھنڈے بھی لہرائے جارہے تھے۔

22
22

ترکیہ کی حمایت یافتہ عبوری حکومت کے تعلقات عامہ کے اہلکار یاسر الحجی نے کہا کہ دورے کا مقصد آزاد کرائے گئے علاقوں کی حقیقت کو دیکھنا ہے۔

امریکی ارکان کانگریس نے جنگ کی وجہ سے یتیم ہو جانے والے بچوں سے بھی ملاقات کی۔ شام میں 2011 میں جنگ شروع ہوئی اور اس جنگ میں اب تک نصف ملین سے زیادہ لوگ مارے جا چکے ہیں۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمٰن نے وضاحت کی ہے کہ امریکہ میں تنازع پیدا کرنے سے بچنے کے لیے ارکان کانگریس ’’حیات تحریر الشام‘‘ کے زیر کنٹرول علاقوں میں نہیں گئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کانگریس کے ارکان عبوری حکومت کے کام کا جائزہ لینا چاہتے تھے تاکہ باب الھویٰ کے بجائے باب السلامہ کے ذریعے انسانی امداد بھیجنے کے امکان کا مطالعہ کیا جا سکے۔ حیات تحریر الشام صوبہ ادلب کے تقریباً نصف اور ملحقہ صوبوں حلب، لطاکیہ اور حما میں کنٹرول کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں