امریکہ اور مصر کا حالیہ فوجی مشقوں کے دوران مستحکم فوجی تعلقات کا اظہار

ایک ماہ تک جاری رہنے والی ان مشقوں میں لگ بھگ 1500 امریکی سروس ممبران شرکت کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی اور مصری فوجوں نے اس ہفتے مشترکہ مشقوں کا آغاز کیا ہے تاکہ روایتی اور غیر منظم جنگی صورتحال پر قابو پانے کے طریقوں پر توجہ دی جا سکے۔

یو ایس سینٹرل کمانڈ (CENTCOM) نے ایک بیان میں کہا کہ" مشق برائٹ اسٹار 2023 "مصر میں محمد نجیب ملٹری بیس پر منعقد کی جا رہی ہے اور یہ مصر اور امریکہ کے درمیان سٹریٹجک سکیورٹی تعلقات پر استوار ہے۔

ایک ماہ تک جاری رہنے والی ان مشقوں میں لگ بھگ 1500 امریکی فوجی حصہ لیں گے۔ یہ مشقیں فیلڈ ٹریننگ ایکسر سائز (FTX)، ایک کمانڈ پوسٹ ایکسرسائز (CPX) پر مشتمل ہوں گی جو فوجی فیصلہ سازی کے عمل کا احاطہ کریں گی۔ جس میں ملٹری اکیڈمکس، کمانڈ اینڈ کنٹرول، کمبائنڈ جوائنٹ ٹاسک فورس کی منصوبہ بندی اور ایک سینئر لیول لیڈر شپ سیمینار بھی شامل ہے۔

مشرق وسطیٰ کے لیے اعلیٰ امریکی فوجی جنرل نے کہا کہ برائٹ سٹار طویل عرصے سے مشرق وسطیٰ میں ٹھوس فوجی تعلقات اور شراکت داری کی مثال ہے۔ CENTCOM کے سربراہ جنرل ایرک کوریلا نے کہا کہ"اس سال کی مشق امریکہ اور مصر کے درمیان فوجی تعاون کے مضبوط تعلقات کو ظاہر کرتی ہے اور ان ممالک کے باہمی تعاون کو مزید گہرا کرتی ہے۔"

بنیادی طور پر برائٹ سٹار 23 انسداد دہشت گردی، علاقائی سلامتی اور پرتشدد انتہا پسندی کے پھیلاؤ سے نمٹنے کی کوششوں کی ایک اہم کڑی کے طور پر مانی جاتی ہے۔

واضح رہے کہ یہ CENTCOM ایریا آف ریسپانسیبلٹی (AOR) میں سب سے طویل چلنے والی مشقوں میں سے ایک ہے اور یہ 1980 سے ہو رہی ہے۔ اس سال منعقد ہونے والی اس سلسلے کی یہ 18 ویں مشقیں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں