اوباماانتظامیہ کے سابق وزیرخزانہ اسرائیل میں امریکا کے نئے سفیر نامزد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

صدر جو بائیڈن نے اوباما انتظامیہ کے ایک سابق اعلیٰ عہدہ دار کو اسرائیل میں امریکا کا نیا سفیر نامزد کیا ہے۔

ٹام نائڈز کی جگہ لینے والے جیکب لیو کے تقرر کی منظوری کانگریس دے گی اور ان کی نامزدگی کو مزید کارروائی کے لیے کیپیٹل ہل کو بھیجا جائے گا۔

ان کے پیش رو نائڈز نے اسرائیل میں قریباً دو سال خدمات انجام دی ہیں۔انھوں نے اس سال کے اوائل میں عہدہ چھوڑنے کے ارادے کا اعلان کیا تھا اور یہ بتایا گیا تھا کہ وہ خاندانی وجوہ کی بنا پر امریکا واپس آ رہے ہیں۔

جیکب لیو اس وقت لنڈسے گولڈ برگ کے منیجنگ پارٹنر اور کولمبیا یونیورسٹی میں بین الاقوامی اور عوامی امور کے وزیٹنگ پروفیسر ہیں۔

اس سے قبل وہ صدر براک اوباما کے وزیرخزانہ کے طور پر بھی خدمات انجام دے چکے ہیں اور دیگر عہدوں پر بھی فائز رہے ہیں۔لیو 1998 سے 2001 تک کلنٹن انتظامیہ میں بھی عہدوں پر فائز رہے تھے۔

اوباما انتظامیہ میں شامل ہونے سے قبل لیوسٹی گروپ کے دو کاروباری یونٹوں کے منیجنگ ڈائریکٹر اور چیف آپریٹنگ آفیسر تھے۔وہ اس وقت امریکا چین تعلقات کی قومی کمیٹی کے بورڈ کے سربراہ ہیں، اسرائیل امریکا کی نیشنل لائبریری کے بورڈ کے شریک صدر ہیں اور خارجہ تعلقات کونسل کے رکن ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں