’روسی فوجی میری پیروی کریں‘ منحرف پائلٹ کا ساتھیوں کو یوکرین سے پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

روس کے منحرف ایک پائلٹ نے اپنے ساتھیوں کو پیغام دیا ہے کہ وہ بھی اس کے نقش قدم پر چلتے ہوئے علم بغاوت بلند کریں اور جنگ چھوڑ کر یوکرین آجائیں۔

یوکرین کے خلاف روسی فوجی آپریشن پر اسے افسوس تھا۔ یہی وجہ ہے کہ روسی پائلٹ کیپٹن میکسم کزمینوف کو منحرف ہونے کے علاوہ کوئی حل نہیں ملا۔

یوکرین کی ملٹری انٹیلی جنس سروس سے مدد حاصل کرنے کے بعد وہ گذشتہ ماہ ہیلی کاپٹر کے ذریعے یوکرین کی سرزمین پر پہنچ گیا تھا۔

وہ اپنے دو ساتھیوں کو بھی ساتھ لے گیا

انہوں نے منگل کو صحافیوں سے بات کرتے ہوئے وضاحت کی کہ انہوں نے اپنے ایم آئی 8 ہیلی کاپٹر کو کھیتوں کے اوپر نچلی سطح پر اڑایا تھا جس کا پتہ لگانے سے بچنے کے لیے ٹرانسپونڈر بند کر دیا گیا تھا۔ اس کارروائی کی مہینوں سے یوکرین کی ملٹری انٹیلی جنس ایجنسی کے ساتھ منصوبہ بندی کی گئی تھی۔

وال سٹریٹ جرنل کے مطابق کیپٹن میکسم کزمینوف نے بھی یوکرین سے ایک پریس کانفرنس کے دوران اپنی پہلی عوامی موجودگی میں کہا کہ انہوں نے’ایچ یو آر‘ ایجنسی سے رابطہ کیا۔

کزمینوف کی عمر 28 سال ہے اور وہ روس کے مشرق بعید سے تعلق رکھتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس نے روسی فوج کے لیے ٹرانسپورٹ پائلٹ کے طور پر کام کیا۔ روس بھر میں فوج اور ساز و سامان پہنچایا اور جنگ شروع ہونے کے بعد وہ جنوبی یوکرین کے مقبوضہ علاقوں میں بھی چلا گیا۔

اس کے بعد اس نے HUR کے ساتھ اس منصوبے پر اتفاق کیا کہ وہ اپنی کمان کے تحت ایک Mi-8 ہیلی کاپٹر کو یوکرین میں ایک محفوظ راہداری کے ذریعے اڑانے کامیاب ہوگیا۔ اس کے ساتھ دو روسی فوجی بھی سوار تھے جب وہ جنوبی روس کے کرسک سے روانہ ہوئے تو ان میں سے کسی کو اس منصوبے کا علم نہیں تھا۔

جب وہ شمال مشرقی یوکرین میں وووچانسک کے قریب اپنی منزل کے قریب پہنچا تو اس نے کہا کہ یہ لوگ گھبرانے لگے، پھر ہیلی کاپٹر کے اترنے پر انہوں نے چھلانگ لگا دی اور شمال کی طرف سرحد کی طرف بڑھے۔

بدلے میں HUR کے ڈائریکٹر میجر جنرل کریلو بڈانوف نے یوکرین کے میڈیا کو اطلاع دی کہ دو افراد اس وقت مارے گئے جب انہوں نے فرار ہونے کی کوشش کی۔

’میری پیروی کرو‘

ماسکو نے کزمینوف کے منحرف ہونے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ روسی فضائیہ سے منسلک ٹیلیگرام پر ایک روسی فوجی ہوابازی چینل Fighterbomber نے HUR کی طرف سے جاری کردہ ویڈیو کے رد عمل میں کہا کہ اس کہانی پر بھروسہ نہیں کیا جانا چاہیے۔

آپریشن کے روسی انکار کا سامنا کرتے ہوئے۔ HUR نے گذشتہ اتوار کو ایک ویڈیو جاری کی جس میں کزمینوف کے ساتھ ایجنسی کے تعاون کی تفصیل دی گئی، جس نے کہا کہ وہ فرار ہونے کا موقع تلاش کر رہا تھا۔

روس کے مشرق بعید میں پریمورسک کے علاقے میں تعینات روسی آرمی ایوی ایشن کی 319 ویں منحرف ہیلی کاپٹر رجمنٹ کے پائلٹ کزمینوف نے کہا کہ جب جنگ شروع ہوئی تو وہ دو اپارٹمنٹس میں آرام دہ زندگی گزار رہے تھے اور اچھی تنخواہ پر تھے۔

اس نے یہ انکشاف کیا کہ 2022ء کے آخر میں اس نے ٹیلیگرام پر ایک خفیہ گفتگو میں HUR کے نمائندوں کو لکھا کہ وہ روسی فوجی ہیلی کاپٹر کو چرانے اور اسے یوکرین میں اتارنے کے منصوبے پرغورکررہا ہے۔ اس منصوبے کی تکمیل کے عوض اسے جنگ کے قوانین کے تحت اسےپانچ لاکھ ڈالر معاوضہ بھی دینے کا وعدہ کیا گیا۔

موسم گرما میں 9 اگست کو وہ یوکرین کے لیے پرواز کے راستے پر جانے کو تیار ہوگیا۔دوپہر کواس نے کرسک میں ایک ہوائی اڈہ چھوڑا اور جہاز میں موجود دو دیگر فوجیوں کے ساتھ یوکرین کے خارکیف علاقے کی طرف روانہ ہوا۔ اس نے زمین سے 32 فٹ سے بھی کم بلندی پر پرواز کی۔ تاکہ اس کے ہیلی کاپٹر کا پتا نہ چل سکے۔ اس نے کہا کہ اسے سرحد پار کرتے ہوئے نامعلوم سمت سے گولیوں کا نشانہ بنایا گیا۔

HUR کے حکام نے بتایا کہ فورسز کوے ہیلی کاپٹر کے ارد گرد تعینات کیا اور اس کا کنٹرول سنبھال لیا۔ روسی فوجی کارروائیوں سے متعلق دستاویزات اور طیارے کے پرزہ جات کی حفاظت کی ہدایت دی گئی۔

جہاں تک کزمینوف کا تعلق ہے، اس نے وضاحت کی کہ وہ اپنے اختیارات کا مطالعہ کر رہا ہے اور مستقبل قریب کے لیے یوکرین میں رہنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ اس نے کہا کہ اسے حفاظت کی ضمانتیں دی گئی ہیں اور پانچ لاکھ ڈالر کی رقم بھی دی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں