امریکہ نے ایرانی سپاہ کا کروڑوں ڈالر کا خام تیل ضبط کرلیا

9 لاکھ 80 ہزار بیرل سے زیادہ ممنوعہ خام تیل پکڑا گیا: امریکی محکمہ انصاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی محکمہ انصاف نے اعلان کیا ہے کہ امریکہ نے ایران کی ’’سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی‘‘ کی جانب سے کئی ملین ڈالر کے خام تیل کی ترسیل میں خلل ڈال دیا اور 9 لاکھ 80 ہزار بیرل سے زیادہ ممنوعہ خام تیل ضبط کرلیا ہے۔

محکمہ انصاف نے ایک بیان میں کہا کہ یہ پہلی مجرمانہ کارروائی ہے جس میں کسی کمپنی نے ایرانی تیل کی غیر قانونی فروخت اور نقل و حمل میں سہولت فراہم کرکے پابندیوں کی خلاف ورزی کی ہے۔

19 اپریل کو سویز راجن لمیٹڈ نے امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی کی سازش کرنے کا اعتراف کیا۔ اسی دن کمپنی کو تین سال کی "کارپوریٹ پروبیشن" کی سزا سنائی گئی اور تقریباً 2.5 ملین ڈالر کا جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔

امریکی ضلعی عدالت نے ممنوعہ سامان لے جانے والے جہاز کے خلاف ضبطی کا وارنٹ جاری کیا اور کمپنی ایمپائر نیویگیشن نے ایرانی تیل کو امریکہ منتقل کرنے میں تعاون کرنے پر رضامندی ظاہر کی۔

محکمہ انصاف نے کہا کہ آپریشن اب ختم ہو گیا ہے۔ محکمہ انصاف کے مطابق ایمپائر نیویگیشن نے جہاز کے امریکہ کے سفر سے منسلک اہم اخراجات کا احاطہ کیا ہے۔

یاد رہے امریکہ تیل کے کارگو کے ساتھ کچھ بھی کرنے سے ہچکچا رہا تھا۔ ناقدین کا کہنا تھا کہ بائیڈن انتظامیہ ایران کے ساتھ پردے کے پیچھے ہونے والے معاہدے کی جانب گامزن ہے۔ اس معاہدہ سے امریکہ ممکنہ طور پر ایٹمی ہتھیاروں کے لیے درکار یورینیم کی افزودگی کی سطح کو سست کر دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں