ترکیہ: ایک ہزار میٹر گہرے غار میں پھنسے امریکی کے لیے ریسکیو آپریشن

مارک ڈکی کو دوسروں کے ساتھ ٹورس پہاڑوں میں مرکا غار کی مہم کے دوران پیٹ میں خون بہنے لگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ترکیہ میں ایک ہزار میٹر گہرے غار میں پھنسے امریکیوں کے لیے ریسکیو آپریشن شروع کردیا گیا۔ ترکیہ کے ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایجنسی کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ امدادی ٹیموں نے ہفتے کے روز ایک امریکی ایکسپلورر کو نکالنے کے لیے ایک مشکل آپریشن شروع کیا۔ امریکی مہم جو غار کے داخلی دروازے سے 1,000 میٹر نیچے گرا ہوا ہے۔

62
Advertisement

امریکی مہم جو مارک ڈکی کو سطح پر لانے میں کئی دن لگ سکتے ہیں کیونکہ بچاؤ کرنے والے توقع کرتے ہیں کہ انہیں راستے میں "ریسٹ ہاؤسز" میں رک کر آرام کرنا پڑے گا کیونکہ وہ تنگ راستوں سے اس کے سٹریچر کو کھینچ رہے ہیں۔

ترکیہ کے ڈیزاسٹر اینڈ ایمرجنسی مینجمنٹ کے اہلکار نے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایاکہ اسے 1,040 میٹر کی گہرائی میں واقع اپنے کیمپ سے 700 میٹر کی گہرائی میں واقع کیمپ میں منتقل کرنے کا عمل ہفتہ کی سہ پہر شروع ہوا۔

واضح رہے 40 سالہ ایکسپلورر کو جنوبی ترکیہ میں ٹورس کے پہاڑوں میں مرکا غار میں ایک مہم کے دوران پیٹ میں خون بہنے کی وجہ سے الٹیاں آنا شروع ہو گئیں۔

پورے یورپ سے ریسکیو ٹیمیں ڈکی کی مدد کے لیے پہنچ گئیں۔ 3 ستمبر کو ہنگری کا ایک ڈاکٹر آیا اور غار کے اندر اس کا علاج کیا۔ تب سے ڈاکٹرز وں امدادی کارکن مارک ڈکی کی دیکھ بھال کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں