سوئس طیارے کی مسافروں کے سامان کے بغیر اڑان کی انوکھی وجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایک عجیب وغریب واقعے میں سپین کے شہر زیورخ سے بلباؤ جانے والا سوئس طیارہ ہفتے کے روز مسافروں کے سامان کے بغیر ائیر پورٹ پہنچا۔

روزنامہ ’’بلک‘‘ کی رپورٹ کے مطابق، ہفتے کی شام شمالی ہسپانوی شہر بلباؤ جانے والی سوئس ایئر لائنز کی پرواز کے مسافروں نے کنویئر بیلٹ کے ذریعے اپنے سامان کے ظاہر ہونے کا دو گھنٹے سے زیادہ انتظار کیا۔

اتوار کو میڈیا رپورٹ کے مطابق، سوئس ایئر لائن نے اس کی وجہ ایئر پورٹ پر عملے کی کمی کو قرار دیا۔

سوئس ایئر لائنز کے ترجمان کیون امبالم نے تصدیق کی کہ طیارہ، جو ایئر لائن "ایڈلوائس" کے لیے کام کرتا ہے، 111 مسافروں کو لے کر اور بغیر کسی سامان کے اڑایا گیا۔

"ہم ابھی صورتحال کا جائزہ لے رہے ہیں۔"

انہوں نے اے ایف پی کو بتایا کہ"ایئرپورٹ پر عملے کی کمی تھی،" اور موجود عملہ ابتدائی طور پر صورتحال کے حل ہونے کا انتظار کر رہا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایک گھنٹہ سے زیادہ گزر جانے کے بعد، "صورتحال جوں کی توں رہی، اور آپریشنل وجوہات کی بناء پر ہم نے بغیر سامان کے بلباؤ جانے کا فیصلہ کیا کیونکہ دوسرے مسافر بلباؤ میں انتظار کر رہے تھے اور رات کے لیے ہوائی اڈہ بند ہونے سے پہلے انہیں طیارہ اڑانا تھا۔

"ہم مسافروں کو ہونے والی تکلیف کے لیے معذرت خواہ ہیں۔" انہوں نے کہا۔

مسافروں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ سوئس ائر کا ایک بھی ملازم بلباؤ ہوائی اڈے پر موجود نہیں تھا، اور انہیں اپنا سامان لینے کے لیے دو گھنٹے سے زیادہ انتظار کرنا پڑا۔

مقبول خبریں اہم خبریں