روس اور یوکرین

قیدیوں کے تبادلے کے لیے یوکرین روسی فوجیوں کی لاشیں اکھٹی کرنے لگا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

روس اور یوکرین کے درمیان جیسے جیسے جنگ کی رفتار بڑھ رہی ہے اس کے ساتھ دونوں طرف سے ہلاکتوں میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔

یوکرین کے بہت سے فوجی اسرائیلی فوجیوں کے ہاتھوں مارے گئے یا گرفتار ہوئے ہیں۔ یوکرین اپنے فوجیوں کی زندہ یا مردہ واپسی کے لیے لڑائی میں مارے جانے والےروسی فوجیوں کی لاشیں جمع کر رہا ہے۔

یوکرین کے فوجی ایک ویران علاقے کی سڑک پر لاشیں تلاش کرتے ہیں ۔ انہوں نے اس سڑک کو روسی فوجیوں کی لاشوں کے لیے "ڈیتھ روڈ" کا نام دے رکھا ہے۔ وہاں پر روسی فوجیوں کی لاشوں کو تلاش کرتے دیکھے جا سکتے ہیں۔ یوکرینی فوجی امید کرتے ہیں کہ وہ روسی فوجیوں کی لاشیں دے کر اپنے زندہ ساتھیوں کی واپسی یا میتوں کی واگزاری کرا سکتے ہیں۔

اس سڑک کو ’شاہراہ موت‘ اس لیے قرار دیا کیونکہ اس پر گذشتہ جون میں ہونے والی لڑائی میں روسی فوجیوں کو پسپائی کا سامنا کرنا پڑا تھا اور یوکرینی فوج نے ملک کے جنوب مشرق میں واقع گاؤں پلاہوڈاٹنی پر دوبارہ قبضہ کرلیا تھا۔ اس لڑائی میں بہت سے روسی فوجی مارے گئے تھے۔

لاشوں کی تلاش

تین ماہ بعد محاذ جنگ جنوب کی طرف منتقل ہوا اور سڑک آخر کار اتنی محفوظ تھی کہ تین یوکرائنی فوجیوں کی ٹیم ڈونیٹسک کے آزاد کردہ حصے میں اپنا مشن شروع کر سکتی تھی۔

یوکرینی فوجی

ایک 50 سالہ میرین وولوڈیمیر نے کہا جب دور سے توپ خانے کی گولہ باری ہوگی تو ہم بدبو کے پیچھے روسی فوجیوں کی لاشوں کو تلاش کرنے کے لیے جائیں گے‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ روسی افواج کو پلا ہوڈاٹنی سے فوری طور پر پیچھے ہٹنا پڑا۔ باہر نکلنے کا واحد راستہ ناقابل استعمال تھا کیونکہ یہ بارودی سرنگوں سے بھرا ہوا تھا۔

اس نے یہ بھی وضاحت کی کہ "ہو سکتا ہے کہ فائرنگ کا تبادلہ ہوا ہو، لیکن روسی بہت تیزی سے پیچھے ہٹ گئے"۔

یوکرینی فوجی نے مزید کہا کہ "وہ زخمیوں اور لاشوں کو سڑک پر چھوڑ کر اوروگینی کی طرف بھاگ گئے، لیکن وہ وہاں بھی زیادہ دیر تک نہیں ٹھہرے۔ اسے آزاد کرانے کے لیے شدید لڑائی ہوئی۔ بعد میں اس پر بھی دوبارہ قبضہ کر لیا گیا۔

تباہ شدہ گاڑیاں اور عمارتیں

ایک 53 سالہ رضاکار واسیلی نے کہا کہ "ہم یہی کرتے ہیں۔ ہم ان کی لاشیں جمع کرتے ہیں۔ ہم اپنے زندہ قیدیوں اور لاشوں کے بدلے اپنے نوجونوانوں کی واپسی کا انتظام کرتے ہیں۔ آپ جانتے ہیں کہ ہم ایسا کیوں کرتے ہیں۔ اس لیے تاکہ ماں قبرستان جا سکتے ہیں۔"

ٹوٹی پھوٹی گاڑیاں اور تباہ شدہ عمارتیں سڑک پر بکھری پڑی تھیں۔ ایک موقع پر سپاہیوں نے ایک لاش کو گھسیٹنے کے لیے رسی کا استعمال کیا تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ پسپا ہونے والی روسی افواج نے اس کے ساتھ بوبی ٹریپ تو نہیں لگایا۔

جمعے کو دن بھر جاری رہنے والی تلاش کے دوران گروپ کو نو لاشیں ملیں۔ انہیں ایک ٹرک میں لاد کر فرانزک جانچ کے لیے لے جایا گیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ فروری 2022 میں کریملن کی جانب سے یوکرین پر اپنے جامع حملے کے آغاز کے بعد سے روس اور یوکرین متواتر جنگی قیدیوں کے ساتھ ساتھ ہلاک ہونے والے فوجیوں کی لاشوں کا تبادلہ کرتے رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں